شوکت خانم پشاور میں پہلے پٹ سی ٹی سکین کا آغاز

شوکت خانم پشاور میں پہلے پٹ سی ٹی سکین کا آغاز

  



پشاور(پ ر)شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر پشاور نے قیام کے چار سال مکمل ہونے کے موقع پر ایک اوراہم ترین سنگِ میل عبور کرتے ہوئے پٹ سی ٹی سکین (ET CT scan) کی سہولت کا آغاز کر دیا ہے۔ پاکستان کے شمال میں یہ اپنی طرز کی پہلی مشین ہے جس سے روالپنڈی،اسلام آباد، خیبر پختونخواہ اور افغانستان سے تعلق رکھنے والے مریضوں کوسکیننگ کی سہولت فراہم کی جاسکے گی۔ اس سے قبل یہ سہولت شوکت خانم کینسر ہسپتال لاہور میں ہی میسر تھی اور خیبر پختونخواہ اور ملحقہ علاقوں سے تعلق رکھنے والے افراد کو سفر کی تکالیف اور اخراجات برداشت کر کے متعدد لاہورآنا پڑتا تھا۔ اب ایسے تمام مریضوں کو یہ اضافی مالی بوجھ اور سفر کی تکلیف برداشت نہیں کرنا پڑے گی۔پٹ سی ٹی سکین(PET CT) کینسرکی درست سٹیج تشخیص کرنے میں کلیدی حیثیت رکھتاہے۔کینسر کے تمام مریضوں کو علاج سے قبل اور دورانِ علاج ایک سے زائد مرتبہ پٹ سی ٹی سکین کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ اس سکین کی مدد سے مریض کے علاج کی درست سمت متعین کرنے میں مدد ملتی ہے۔ شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر میں نیو کلئیر میڈیسن کے شعبے کی بنیاد ہسپتال کی تعمیر کے ساتھ ہی رکھ دی گئی تھی اور وقت کے ساتھ یہاں اس ضمن میں نئی ٹیکنالوجی متعارف کروائی جاتی رہی ہے۔ اس وقت پرائیوٹ سیکٹر میں یہ سب سے بڑا نیو کلئیر میڈیسن ڈپارٹمنٹ ہے جس میں لاہور اور پشاور میں دو پٹ سی ٹی سکین کام کر رہے ہیں جبکہ تیسر ا جدید ترین پٹ سی ٹی رواں برس شوکت خانم ہسپتال لاہور میں نصب ہو جائے گا۔ واضح رہے کہ گزشتہ بر س شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر، پشاور کا فیز ٹو یہاں ریڈی ایشن اونکالوجی ڈپارٹمنٹ کے آغاز کے ساتھ مکمل ہو گیا تھا اور اب پٹ سی ٹی سکین کے آغاز کے ساتھ یہا ں نیوکلئیر میڈیسن ڈپارٹمنٹ کا آغاز بھی ہو چکا ہے جس کواسی سال تشخیص و علاج کی مزید سہولیات سے اپ ڈیٹ کیا جائے گا۔

 شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال پشاور سے ہزاروں کی تعداد میں صوبہ خیبرپختونخواہ، فاٹااور اس سے ملحقہ علاقوں سے لے کر افغانستان تک کے کینسر کے مریض مستفید ہورہے ہیں اب ان مریضوں کو ان کے گھر سے قریب ہی پٹ سی ٹی سکین کی سہولت دستیاب ہو گئی ہے۔ شوکت خانم ہسپتال لاہور کی طرح یہاں بھی 75%سے زائد مریضوں کا علاج بلا معاوضہ کیا جا رہا ہے۔ یہ ہسپتال نہ صرف صوبہ خیبر پختونخواہ کے کینسر کے مریضوں کیلئے امید کی ایک کرن ہے بلکہ پاکستان میں کینسر کے علاج کی دستیاب سہولتوں میں ایک مثبت اضافہ بھی ہے۔

مزید : کامرس


loading...