لائف ٹرسٹ ہپستال ہزاروں مریضوں کو مفت طبی سہولیات فراہم کر رہا ہے:کامران مسعود مگوں 

  لائف ٹرسٹ ہپستال ہزاروں مریضوں کو مفت طبی سہولیات فراہم کر رہا ہے:کامران ...

  



لاہور (جاویداقبال)لائف ٹرسٹ ہسپتال روزانہ غریب امیر کی تمیز کیے بغیر ہزاروں لوگوں کو علاج معالجہ کی مفت سہولیات فراہم کر رہا ہے لہذا حکومت ایسے ہسپتالوں کی سرپرستی کرے،مراکہ، بحریہ ٹاؤن، رائیونڈ کوٹ رادھاکشن،پتوکی اور لاہور تک کے غریب مریضوں کو یہ اسپتال مفت سہولیات فراہم کر رہا ہے حکومت ہماری خدمات کو دیکھتے ہوئے اس اسپتال کے لئے بجلی کا ڈبل کنکشن دیکر پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے زیر اہتمام یہاں پر دل کا فلٹر کلینک قائم کرے دیگر خیراتی ہسپتالوں کی طرح لا ئف ٹرسٹ ہسپتال کو بھی زکوٰۃ اور سوشل ویلفیئر سے فنڈز کا حصہ دے امر کا اظہار ٹرسٹ ہسپتال کے فاؤنڈرز ممبرز اور عہدیداران  فاؤنڈر رہنما کامران مسعود مگوں، جوائنٹ سیکرٹری ناصر احمد سہگل، ایم ایس ڈاکٹر زاہد ایوب، میڈیا مینیجر ذیشان صدیق نے روزنامہ پاکستان کے فورم میں گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر  فاؤنڈر کامران مسعود مگو نے کہا اس علاقے میں لائف ٹرسٹ اسپتال غریب مریضوں کے لیے امید کی کرن ہے زکوٰۃ سے غریب مریضوں کا علاج ضرور کیا جاتا ہے لیکن اس بات کا خاص خیال رکھا گیا ہے کہ کسی بھی مریض کی دل آزاری اور تذلیل نہ ہو۔ہم 20 روپے میں مریض کے ڈائلسز سے لے کر ہر قسم کا علاج ، آنکھوں،گائنی کے آپریشن بھی یہاں مفت کئے جاتے ہیں اس میں لینزچاہے ایک روپیہ کا ہو یا پچاس ہزار کا صرف20 روپے میں ڈالا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ گرمیوں میں یہاں اس علاقے میں لوڈشیڈنگ ہوتی ہے۔جس وجہ سے بعض اوقات ڈائلسز پر لگے ہوئے مریضوں کی زندگی خطرے سے دوچار ہوجاتی ہیں۔ ہم حکومت سے اپیل کرتے ہیں کہ انسانی ہمدردی کے تحت  اسپتال کو بجلی کا ڈبل کنکشن دیاجائے۔انہوں نے کہا کہ ابھی تک ہم ایک ماہ کے  اندر 400 مریضوں کے مفت ڈائلسز کر رہے ہیں مگر ایسی مریضوں کی لمبی لسٹ ہے جن کو  اپنی باری کا انتظار ہے۔ حکومت سرپرستی کرے تو اس میں 100 فیصد اضافہ کر سکتے ہیں۔جوائنٹ سیکرٹری ناصر احمد سہگل نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب اس علاقے کے غریب مریضوں سے دوستی کا حق ادا کریں ہم یہاں دل کا وارڈ قائم کرنے کے لیے تیار ہیں یہ ضروری ہے کہ حکومت یہاں پر کارڈیک فلٹر کلینک قائم کرے  جو پنجاب  کارڈیالوجی  کی سرپرستی میں چلے۔ فنانس سیکرٹری حنان مسعود نے کہا کہ ہمارا مریض ہمارے لئے وی آئی پی ہے۔ حکومت  برائے نام خیراتی اسپتالوں کی طرح ہمارے جیسے غریبوں کی خدمت کرنے والے ہسپتال کو بھی فنڈز دے۔ ایم ایس ڈاکٹر ایوب  زاہد نے کہا کہ علاج  کے لیے آنے والا ہر غریب ہمارے لئے مہمان ہے۔ان کو علاج معالجہ کے ساتھ ساتھ گھر کے لیے دوائی بھی دی جاتی ہے اور آنے جانے کا کرایہ بھی دیا جاتا ہے۔حکومت سے اپیل ہے کہ لائف ہسپتال آنے جانے والے مریضوں کو مفت ایمبو لینس فراہم کی جائے۔ سینئر ممبر عامر حق نے کہا کہ  ڈائلسزکی سہولت کو ڈبل کیا جاسکتا ہے ایک وقت میں 36 مشینیں  لگائی جاسکتی ہیں۔ایک ڈاءئلسز پر ایک وقت میں ایک مریض  کا خرچہ 55 سو روپے آتا ہے  اس حساب سے سالانہ 800 ملین درکار ہیں وہ حکومت  دے یا مریضوں کی زندگیاں بچانے کے لیے مخیر حضرات مدد کریں۔ میڈیا مینیجر  ذیشان صدیق نے کہا کہ ہم روزنامہ پاکستان کے چیف ایڈیٹر مجیب الرحمان شامی کے شکرگزار ہیں کہ جنہوں نے مطابق دورہ کیا اور اپنی آنکھوں سے دیکھا کہ کس طرح ہم غریب مریضوں کو بھی وی آی پی مریضوں کا درجہ دے کر علاج معالجے کی مفت سہولیات فراہم کر رہے ہیں۔

لائف ٹرسٹ

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...