ضابطہ دیوانی میں ترامیم حکومت کی ناہلی اور غیر سنجیدہ کوشش ہے: بارکونسل خیبر پختونخوا 

ضابطہ دیوانی میں ترامیم حکومت کی ناہلی اور غیر سنجیدہ کوشش ہے: بارکونسل ...

  



پشاور(سٹی رپورٹر)خیبر پختونخوا بار کونسل نے حکومت کیجانب سے ضابط دیوانی اور قانون منشیات میں حالیہ ترامیم سے دوردراز علاقوں کے عوا م کو انصاف مزید مہنگا پڑیگا قانون دا نو ں نے مذ کور ہ ترامیم کو حکومت کی نا اہلی،غیر سنجیدگی اور نان ایشو کو ایشو بنا کر عوا م پر مزید بوجہ ڈالنے کی مترادف قرار دیدیا۔گزشتہ روز پشاور پر یس کلب میں خیبر پختو نخوابا ر کونسل کے صدر عبد الطیف آفریدی، وائس چیئر مین سعید خان، عبدالولی آف چترا ل اور د یگر نے پر یس کانفر نس کر تے ہو ئے کہا کہ حکومت کی نا اہلی کی وجہ سے عوا م کو اب غیر سنجیدہ دفعات میں سول کورٹ اور ڈسٹرکٹ کورٹ کے بجائے چھو ٹے چھوٹے مقد مات کو ہا ئی کورٹ میں لا نے کیلئے ضا بط د یوانی اور منشیات ایکٹ میں ترمیم کر کے عوا م ذلیل و خوار کر نے پر تلے ہو ئے ہیں مذ کورہ ایکٹ کو نا فذ کر تے وقت وکلا ء برادری نے تین روز مسلسل عد التوں کا با ئیکاٹ کیا گیا تھا جبکہ اس کے بعد وزیر اعلیٰ کے ساتھ ایک تفصیلی ملاقات ہو ئی جس میں انہوں نے یقین د ہا نی کرا ئی کہ مذ کور ہ ترامیم کو چھ ما ہ کیلئے معطل کر کے مشاورت کے بعد نیا ڈرافٹ تیا ر کیا جا ئیگا۔انہوں نے کہاکہ تا حا ل مذ کور ہ تر امیم کونہ معطل کیا اور نہ ہی کو ئی مثبت پیش رفت کی تا ہم حکومت افہا م و تفہیم سے ترا میم واپس لینے میں دلچسپی نہیں ر کھتی۔انہوں نے کہاکہ حکومت کو چا ہیے کہ وہ قبا ئلی علاقوں کے ساتھ ساتھ دوردراز علاقوں میں عدالتی نظا م کو بہتر بنا نے کیلئے کو ئی ٹھوس اقدا م اٹھا ئے تا کہ عدالتی نظا م بہتر ہو نے سے وہاں کے چھوٹے چھوٹے مقد مات حل ہو سکے جبکہ مذ کور ہ تر امیم کی وجہ سے دوردراز علاقو کے عوا م کو مشکلات میں اضافہ ہو تا ر ہا ہے کیونکہ چھو ٹے چھو ٹے مقد مات کی وجہ سے ہا ئی کورٹ پر رش اور مقدمات زیاد ہ ہو نگے اور عوا م کو بر وقت انصاف مہیا نہیں ہو نگے۔انہوں نے خصو صی ٹر بیونل کاریٹائرڈ جنر ل پرویز مشرف کے خلاف فیصلے کو سر ا ہا گیا اور ان کو خرا ج تحسین بھی پیش کیا کیا کہ ملک میں پہلی بار آ ئین اور قانون کے مطا بق فیصلہ د یا گیا جبکہ آر می ایکٹ میں مجوزہ ترا میم کو قانو ناور ضا بط کے طر یقہ کار کو با لا ئے طاق ر کھتے ہو ئے انتہائی جلد بازی میں پا س کر نے پر بھی تحفظا ت کا اظہار کیا گیا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت با ر کونسل اور با ر ایسو سی ایشنز کیلئے سالانہ بجٹ اور مراعات د یا جا ئے جبکہ وکلاء برادر ی نے د ھمکی دی کہ اگر حکومت نے مذ کورہ ترا میم کو واپس نہ لیا گیا تو 8جنور ی سے صو بہ بھر کے عد التو ں سے مکمل با ئیکاٹ کر ینگے اور آ ئندہ کیلئے لا ئحہ عمل بھی دینگے۔ 

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...