چیف جسٹس ہائیکورٹ کا غیر منقولہ جائیداد کی تقسیم سے متعلق مقدمات 28فروری تک نمٹانے کا حکم

  چیف جسٹس ہائیکورٹ کا غیر منقولہ جائیداد کی تقسیم سے متعلق مقدمات 28فروری تک ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے پنجاب کی ضلعی عدالتوں کے ججوں کواپنی گاڑیوں (بقیہ نمبر15صفحہ12پر)

پر ہوٹراورنیلی بتی لگانے سے روک دیا،ماتحت عدالتوں کے ججوں کونجی گاڑیوں کیلئے سبزنمبر پلیٹ استعمال کرنے سے بھی روک دیاگیاہے۔ ایک دوسرے حکم نامے میں چیف جسٹس نے غیر منقولہ جائیداد کی تقسیم سے متعلق تمام مقدمات بھی 28فروری تک نمٹانے کا حکم دے دیاہے۔اس سلسلے میں سیشن ججوں کو مراسلے بھیج دیئے گئے ہیں،گاڑیوں پر ممنوعہ لائٹیں اور ہوٹروغیرہ پر پابندی کے حکم کی خلاف ورزی کرنے والے ججوں کوسخت تادیبی کاروائی کی وارننگ جاری کی گئی ہے۔چیف جسٹس کے حکم پر جاری کئے گئے پہلے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ضلعی عدالتوں کے جج اپنی گاڑیوں پرسائرن، ہوٹر اور عہدہ کی نمبر پلیٹس استعمال کرنے کا اختیار نہیں رکھتے،وہ نجی گاڑیوں پرسبزنمبر پلیٹ لگانے کے بھی مجاز نہیں،مراسلے میں صوبہ بھر کے سیشن ججوں کوہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے ماتحت ججوں کو ایسی نمبر پلیٹس، ہوٹراورممنوعہ لائٹیں استعمال سے روکیں،اگر کسی ضلعی عدلیہ کے جج کے اپنی گاڑیوں پر ایسی نمبر پلیٹس استعمال کرنے کا پتہ چلا تو سخت کارروائی ہوگی،سیشن ججوں کے نام بھیجے گئے دوسرے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ 31 دسمبر 2012 ء تک کے تقسیمِ جائیداد سے متعلق 601 مقدمات زیر التواء ہیں، لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے متعدد بار ہدایات کے باوجود ان مقدمات کے فیصلے نہیں کئے گئے، مراسلے میں کہا گیا ہے کہ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مامون رشید شیخ نے ان زیرالتواء مقدمات کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے 28 فروری 2020 ء تک ان کے فیصلے کرنے کی ہدایت کی ہے، مزید برآں تمام جوڈیشل افسران کو ہدایت جاری کی گئی ہے کہ وہ تقسیمِ جائیداد کے مقدمات کے قانون کے مطابق مقرر کردہ دورانیے میں فیصلوں کو یقینی بنائیں، مراسلے میں تمام ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججوں کو بھی پابند کیا گیا ہے کہ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کی ہدایات پر من و عن عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔

چیف جسٹس ہائیکورٹ

مزید : ملتان صفحہ آخر