کھلاڑیوں و آفیشلزکیلئے چارٹرڈ فلائٹس چلانے کا فیصلہ، پی ایس ایل سے قبل پی سی بی نے خوشخبری سنا دی

کھلاڑیوں و آفیشلزکیلئے چارٹرڈ فلائٹس چلانے کا فیصلہ، پی ایس ایل سے قبل پی سی ...
کھلاڑیوں و آفیشلزکیلئے چارٹرڈ فلائٹس چلانے کا فیصلہ، پی ایس ایل سے قبل پی سی بی نے خوشخبری سنا دی

  



کراچی(ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ کی تاریخ میں پہلی بار پاکستان سپر لیگ کے موقع پر کھلاڑیوں ،آفیشلز اور دیگر لوگوں کے لئے پاکستان کرکٹ بورڈ نے چارٹرڈ فلائٹس چلانے کا فیصلہ کیا ہے، کراچی،لاہور ،اسلام آباد اور ملتان کے درمیان ان خصوصی فلائٹس کو چلانے کا مقصد کھلاڑیوں اور آفیشلز کی اگلے میچوں میں شرکت کو ممکن بنانا ہے،پاکستان 1987اور1996میں ورلڈ کپ کی میزبانی کرچکا ہے لیکن پہلی بار ڈومیسٹک روٹس پر کھلاڑیوں اور آفیشلز اور براڈ کاسٹرز کے لئے چارٹرڈ فلائٹس چلائی جائیں گے،1996کے ورلڈ کپ میں پاکستان اور بھارت کے درمیان چارٹرڈ فلائٹس چلائی گئیں تھیں،بھارت آئی پی ایل کے دوران عام طور پر چارٹرڈ فلائٹس چلاتا ہے۔

پاکستان سپر لیگ فائیو پاکستان کے چار شہروں لاہور ،کراچی،پنڈی اور ملتان کے میدانوں میں20فروری سے شروع ہورہا ہے،روشنیوں کا شہر کراچی رنگا رنگ افتتاحی تقریب کی نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں میزبانی کرے گا جس کے بعد افتتاحی میچ میں اعزاز کا دفاع کرنے والی کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور دو بار کی چیمپئن اسلام آباد یونائیٹڈ مد مقابل ہوں گی،گزشتہ 4 ٹورنامنٹ کے بعد یہ پہلا موقع ہوگا جب تمام میچ پاکستان میں ہوں گے،34 میں سے 14 میچ لاہور، 9 کراچی، 8 راولپنڈی اور 3 ملتان میں ہوں گے،لاہور قلندرز 8 میچ لاہور میں کھیلے گی، کراچی کنگز 10 میں سے صرف 5 میچ کھیلے گی،پی سی بی ترجمان نے چارٹرڈ فلائٹس چلانے کی تصدیق کی ،ان کا کہنا ہے کہ بیک وقت6 ٹیموں کے کھلاڑی آفیشلز،امپائرز،میچ ریفری پاکستان میں موجود ہوں گے۔براڈ کاسٹرز کی دو ٹیمیں (کریو)،کنٹیٹرز،بورڈ کے حکام اور دیگر مہمان بھی ان فلائٹس پر سفر کریں گے۔ایک شہر میں میچ ختم ہونے کے بعد ٹیم کو دوسرے سینٹر پہنچنا ہوگا، اسی طرح کچھ شہروں میں جن میں ملتان سر فہرست ہے،معیاری ہوٹلوں کی کمی ہے اس لئے دوسری ٹیم کی رہائش کے لئے ہوٹل کے کمروں کی ضرورت ہوتی ہے۔

چارٹرڈ فلائٹس سے وقت بچے گا اور کھلاڑیوں کے ساتھ ہوٹل کے کمروں کا مسئلہ بھی حل ہوجائے گا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ غیر ملکی کھلاڑیوں کو ٹورنامنٹ کے دوران مسلسل پاکستان میں رہنا ہوگا اب یہ تجویز نہیں ہے کہ ایک میچ کھیلنے کے بعد کھلاڑی دبئی چلے جائیں گے۔ترجمان کا کہنا ہے کہ پی ایس ایل کا شیڈول ترتیب دیتے ہوئے ہر شہر کی سیکورٹی کے حوالے سے بھی خصوصی احتیاط برتی گئی ہے۔شیڈول بناتے وقت کسی ٹیم کے ساتھ تفریق برتنے کا تاثر غلط ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...