کار میں ڈکیتی کی واردات دیکھ کر ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے پولیس بلالی ، لیکن اصل کہانی کیا تھی؟ جان کر آپ کی ہنسی نہ رکے

کار میں ڈکیتی کی واردات دیکھ کر ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے پولیس بلالی ، لیکن ...
کار میں ڈکیتی کی واردات دیکھ کر ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے پولیس بلالی ، لیکن اصل کہانی کیا تھی؟ جان کر آپ کی ہنسی نہ رکے

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) نوجوانوں پر ٹک ٹاک کاایسا جنون چھایا ہوا ہے کہ انہیں کسی اور چیز کی پرواہ ہی نہیں رہتی ، ٹک ٹاک پر ایسی حرکتیں کی جاتی ہیں کہ کوئی بھی صاحب عقل انسان آنکھوں پر ہاتھ رکھنے پر مجبور ہوجاتا ہے، ویڈیو شیئرنگ کی یہ ایپلی کیشن 30 سال سے کم عمر کے نوجوانوں میں مقبول ہے جس کے باعث بڑی عمر کے لوگ ’ ٹک ٹاک سٹارز‘ کی حرکتوں سے دھوکہ کھا جاتے ہیں، ایسا ہی دھوکہ ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے بھی کھایا ہے۔

ہفتے اور اتوار کی درمیانی شب ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے خود کے ساتھ پیش آنے والا دلچسپ واقعہ بیان کیا۔ انہوں نے ٹوئٹر پر لکھا کہ ’میں نے مین ای 11 روڈ پر ڈکیتی کی ایک واردات دیکھی تو فوری طور پر پولیس کو 15 پر کال کردی، اس دوران خود حالات کا جائزہ لینے کیلئے میں نے گاڑی کی رفتار آہستہ کردی، جب میں کار کے نزدیک گیا تو دیکھا کہ کار کے دروازے کھلے ہوئے ہیں اور دونوں اشارے جل رہے ہیں، ایک لڑکا موبائل فون کے ذریعے ویڈیو بنا رہا ہے جبکہ دوسرا لڑکا پاگلوں کی طرح ناچ رہا ہے۔‘ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے اس پوسٹ کے ساتھ ٹک ٹاک اور ’اقبال تیرے شاہین‘ کے ہیش ٹیگ بھی استعمال کیے۔

اسماعیل خٹک نامی صارف نے ڈپٹی کمشنر سے سوال کیا کہ وہ رات کے اس پہر سڑک پر کیا کر رہے تھے تو حمزہ شفقات نے بتایا کہ وہ صبح کے احتجاج کے حوالے سے معاملات کا جائزہ لینے گئے تھے۔

مرینہ گل نامی خاتون نے وہ ویڈیو بھی شیئر کردی جس کی شوٹنگ کو ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے ڈکیتی کی واردات سمجھ لیا تھا ، خاتون نے لکھا ’ یہ لیں سر اقبال کے شاہین مجرا کرتے ہوئے ۔‘ حمزہ شفقات نے تصدیق کی کہ یہ وہی لڑکے ہیں جن کی ویڈیو شوٹنگ کو انہوں نے ڈکیتی کی واردات سمجھ لیا تھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /اسلام آباد


loading...