حوالگی کیس‘تاحکم ثانی بچے باپ کے پاس رہنے کاحکم، درخواست نمٹادی

حوالگی کیس‘تاحکم ثانی بچے باپ کے پاس رہنے کاحکم، درخواست نمٹادی

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے بچوں کے حوالگی کیس میں تاحکم ثانی بچے باپ کے پاس رہنے کاحکم دیتے ہوئے درخواست نمٹادی،عدالت نے معاملہ گارڈین کورٹ کو بھجواتے ہوئے تین ماہ میں فیصلہ کرنے کا بھی حکم دیاہے،مسٹرجسٹس فاروق حیدر نے ماں کی جانب سے بچوں کی حوالگی کیلئے دائر درخواست پر سماعت کی،سمندری کے رہائشی درخواست گزارنگین عثمان کا موقف تھا کہ اس نے شہزاد سے شادی کی اوراس کے دو بچے نور فاطمہ اور محمد طلحہ پیدا ہوئے،گھریلو ناچاقی کے باعث دونوں میں طلاق ہوگئی،خاوند نے بچے پاس رکھے ہوئے ہیں،عدالت سے استدعاہے کہ بچوں کو باپ کی تحویل سے بازیاب کروا کر ماں کے حوالے کرنے کا حکم دیاجائے بچوں کے والد نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ درخواست گزارکا کردار ٹھیک نہیں، بچوں کی ماں نے خود ہی طلاق لی ہے اور وہ تین سال قبل بچوں کو چھوڑ کر جاچکی تھی جبکہ خاتون نے اب دوسری شادی کر لی ہے اور اس سے ایک بچہ بھی ہیمیں بچوں کی بہتر تعلیم و تربیت کرسکتا ہوں،عدالت سے استدعاہے کہ بچوں کی حوالگی کے لئے دائر درخواست مستردکی جائے۔

حوالگی کیس

مزید :

صفحہ آخر -