رحیم یار خان: ڈکیتی واردات ٹریس 3 ملزم گرفتار‘ جلد اہم انکشافات متوقع

رحیم یار خان: ڈکیتی واردات ٹریس 3 ملزم گرفتار‘ جلد اہم انکشافات متوقع

  

رحیم یارخان(بیورو رپورٹ) تھانہ اے ڈویژن پولیس نے نجی بنک کار کے گھر ہونے والی ڈکیتی کی واردات ٹریس کر کے 3ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ ہفتہ  قبل کنال ویو میں تین مسلح ملزمان نے گھر میں گھس کر بنک کار کے (بقیہ نمبر50صفحہ7پر)

بوڑھے والدین کونقدی سے محروم کر دیا تھا۔ تفصیل کے مطابق نجی بنک کے ریجنل منیجر مزمل ابرارکے گھر واقع کنال ویواس وقت تین مسلح ڈاکوگھس گئے جب اس کے معمر والد ابرار  اور والدہ کو اسلحہ کی نوک پر یرغمال بنا کر نقدی سے محروم کر دیا تھا اور فرار ہوگئے تھے۔ بوڑھے شہری کسی بھی ملزم کو شناخت نہ کر سکے تھے جس پر اس اندھی  ڈکیتی کی واردات پر کی ایف آئی آر تھانہ اے ڈویژن میں درج کروائی گئی تھی جو کو ٹریس کرنا ایک چیلنج تھا۔ ڈی پی او اسد سرفراز خان نے ایس ایچ او تھانہ سٹی اے ڈویژن شبیر احمد جھورڑ کو واردات ٹری کر کے ملزمان کو کم سے کم وقت میں گرفتار کرنے کا ٹارگٹ دیا جس پرایس ایچ او نے واردات کو ٹریس کرنے کے لیے انچارج سی ڈی یو سٹی سرکل فرید سرور ڈوگر کو ہمراہ کیا اور ملزمان کی کھوج شروع کر دی اور جدید ٹیکنالوجی کے استعمال اور دن رات کی محنت رنگ لائی اور صرف ایک ہفتہ میں ڈکیتی کی اس اندھی واردات کو نہ صرف ٹریس کر لیا گیا بلکہ اس واردات میں ملوث تینوں ملزمان کو بھی گرفتار کر کے شناخت پریڈ کے لیے ڈسٹرکٹ جیل بھجوا دیا گیا۔ جس پر بنک کار مزمل ابرار اور ان کے والد ابرار فاروق نے  گزشتہ روز پولیس کی اس کارکردگی کو سراہنے کے لیے ڈی پی او اسد سرفراز خان سے ملاقات کی اس موقع پر ایس ایچ او شبیر احمد جھورڑ اور انچارج سی ڈی یو فرید سرور بھی موجود تھے جنہیں گلدستے پیش کئے گئے اور انہیں شاندار الفاظ میں خراج تحیسن پیش کیا جس پر ڈی پی او نے شہریوں کی اس حوصلہ افزائی پر ان کا شکریہ ادا کیا اور ایس ایچ او،  انچارج سی ڈی یو اور ٹیم میں شامل دیگر اہلکاروں کے لیے نقد انعام اور تعریفی سرٹیفکیٹ دینے کا اعلان کیا ہے۔

واردات ٹریس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -