محکمہ زراعت توسیع ملتان ٹیم کا چھاپہ  لاکھوں روپے مالیت کی جعلی ڈی اے پی  اور ایس او پی کھاد برآمد‘تحقیقات شروع

محکمہ زراعت توسیع ملتان ٹیم کا چھاپہ  لاکھوں روپے مالیت کی جعلی ڈی اے پی  ...

  

ملتان (سپیشل رپورٹر) اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ زراعت توسیع کا چھاپہ،لاکھوں روپے مالیت کی جعلی ڈی اے پی اور ایس او پی کھاد پکڑی گئی،تین ملزمان گرفتار،مقدمہ درج (بقیہ نمبر6صفحہ5پر)

کرادیا گیا۔تفصیل کے مطابق سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل کی خصوصی ہدایت پر ایسے ہی ایک آپریشن میں ڈائریکٹر زراعت توسیع شہزاد صابرکی سربراہی میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت توسیع رائے ظفر عباس نے مخبر کی اطلاع پرپولیس پارٹی ودیگر اہلکاروں کے ہمراہ چھاپہ مارکر سیداں والا بائی پاس سے جعلی کھادوں کا ٹرک پکڑ لیا۔چھاپہ کے نتیجہ میں 3ملزمان موقع سے گرفتار،ٹرک سے50کلو گرام کی پیکنگ میں جعلی ڈی اے پی کھاد کی 260اور ایس او پی کھاد کی 19بوریاں برآمدکرلیں۔موقع پر پکڑی جانیوالی جعلی کھادوں کی مالیت11 لاکھ روپے سے زائد بنتی ہے۔ملزمان طاہر امیر ولدملک امیر بخش،غلام سرور ولدغلام عباس،محمد یوسف ولد محمد نوازودیگرنامعلوم ملزمان کیخلاف زیر دفعہ 16 پنجاب فرٹیلائزر کنٹرول آرڈر 1973کے تحت تھانہ گلگشت میں ایف آئی آر کے اندراج کیلئے استغاثہ جمع کرادیا گیاہے۔ملزمان جعلی کھادیں غیر قانونی طریقے سے پیکنگ وفارمولیٹ کرکے ملک کے مختلف حصوں میں سپلائی کرکے ملکی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا رہے تھے۔ پکڑی جانیوالی جعلی زرعی ادویات بطور مال مقدمہ قبضہ میں لیکر حوالہ پولیس کردی گئیں۔ موقع سے جعلی کھادوں کے نمونہ جات حاصل کرکے تجزیہ کیلئے لیبارٹری بھجوا دئیے گئے۔ ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے کہا کہ جعلی زرعی مداخل فروخت کرنے والے مافیا کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جارہا ہے اور اس گھناؤنے کاروبار میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جارہی ہے۔اس ضمن میں محکمہ زراعت ٹھوس شواہد کی بنا پر ملزمان کے خلاف ہر سطح پر اپنی کاروائی جاری رکھے ہوئے ہے اور جعلی زرعی ادویات وکھادوں کے دھندے میں ملّوث افراد کوقانون کے حوالے کیا جا رہا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -