برطانوی عدالت میں درخواست مسترد ہونے کے بعد امریکہ کو ایک اور جھٹکا، میکسیکو نے جولین اسانج کو سیاسی پناہ کی پیش کش کردی

برطانوی عدالت میں درخواست مسترد ہونے کے بعد امریکہ کو ایک اور جھٹکا، میکسیکو ...
برطانوی عدالت میں درخواست مسترد ہونے کے بعد امریکہ کو ایک اور جھٹکا، میکسیکو نے جولین اسانج کو سیاسی پناہ کی پیش کش کردی
سورس: Wikimedia Commons

  

میکسیکو (ویب ڈیسک) میکسیکو نے وکی لیکس کے بانی جولین اسانج کو سیاسی پناہ کی پیش کش کردی۔میکسکو کے صدر اینڈریس مینوئل لوپیز اوبرادور کی جانب سے جولین اسانج کو سیاسی پناہ کی پیش کش ایسے وقت میں کی گئی ہے جب برطانوی عدالت نے جولین کو امریکا کے حوالے کرنے کی درخواست مسترد کردی ہے۔

میکسیکو کے صدر کا کہنا ہے کہ میکسیکو جولین اسانج کو سیاسی پناہ دے سکتا ہے۔ انہوں نے برطانوی عدالتی فیصلے کو سراہا اور کہا کہ یہ انصاف کی فتح ہے اور جولین ایک صحافی ہے جسے موقع ملنا چاہیے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ میں ملکی وزیر خارجہ کو سیاسی پناہ کے معاملے پر برطانیہ سے بات کرنے کا کہوں گا۔

خیال رہے کہ جولین اسانج نے 2010 میں وکی لیکس کے ذریعے امریکی فوج کی5 ہزار خفیہ فائلز آن لائن جاری کی تھیں جن میں افغانستان اورعراق میں امریکی فوج کی کارروائیوں سے متعلق تفصیل موجود تھی۔

امریکا نے جولیان اسانج کی حوالگی کیلئے برطانوی عدالت میں درخواست کر رکھی تھی جسے مسترد کردیا گیا ہے۔

جولین اسانج کو اگر امریکا کے حوالے کردیا جاتا تو وہاں انھیں 175 سال تک کی سزا ہوسکتی تھی۔

مزید :

بین الاقوامی -