محکمہ زراعت کے افسران کا جعلی زرعی ادویات بنانے والی فیکٹری پر چھاپہ

محکمہ زراعت کے افسران کا جعلی زرعی ادویات بنانے والی فیکٹری پر چھاپہ

  

لاہور(کامرس رپورٹر)محکمہ زراعت کے افسران نے جعلی زرعی ادویات اور زنک سلفیٹ بنانے والی فیکٹری پر چھاپہ مارا اور لاکھوں روپے مالیت کی جعلی زرعی ادویات اور زنک سلفیٹ کو قبضہ میں لے لیاملزمان کو پولیس کے حوالے کرکے ان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان کے مطابق ڈسٹرکٹ آفیسر زراعت (توسیع) محمد وارث ٹھاکر اور ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر زراعت (توسیع) راﺅ محمد انور نے رائے ونڈ میں کوٹ رادھا کشن روڑ کے بھچوکی پھاٹک پر واقع غیر رجسٹرڈ شدہ فیکٹری پر چھاپہ مارا اور لاکھوں روپے مالیت کی زرعی ادویات اور زنک سلفیٹ قبضہ میں لے کر ملزمان کے خلاف تھانہ رائے ونڈ سٹی میں کیس درج کروا کر پولیس کے حوالے کر دیا گیاہے جبکہ زرعی ادویات اور زنک سلفیٹ کے نمونے تجزیہ کے لئے لیبارٹری بھیج دیئے گئے ہیں ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع) پنجاب ڈاکٹر انجم علی اور ای ڈی او زراعت لاہور چوہدری لیاقت علی بھی موقع پر موجود تھے اس موقع پر ڈاکٹر انجم علی نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایات کے مطابق جعلی زرعی ادویات اور کھاد بنانے والوں کے خلاف محکمہ بھرپور مہم چلا رہا ہے جعلی کھاد اور زرعی ادویات بنانے والوں کو ہرگز معاف نہیں کیا جائے گااس موقع پر انہوں نے زراعت افسران کے کامیاب چھاپہ پر ان کی تعریف بھی کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -