پاکستان کی پہلی سینٹری لینڈ فل سائٹ کی تعمیر تیز ی کے ساتھ جاری

پاکستان کی پہلی سینٹری لینڈ فل سائٹ کی تعمیر تیز ی کے ساتھ جاری

  


لاہور(جنرل رپورٹر)لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی (ایل ڈبلیوایم سی) کی طرف سے لکھو ڈیر کے مقام پر53 ہیکٹر اراضی پر پاکستان کی پہلی سینیٹری لینڈ فل سائٹ کی تعمیر تیزی سے جاری ہے کوڑا کرکٹ کو سائنسی طریقے سے ٹھکانے لگانے کی غرض سے تعمیر ہونے والی سائٹ کے دو سیلوں کی تعمیر کے لیے کھدائی اور زمین بھرنے کا عمل مکمل کیا جا چکاہے اور ساتھ میں جرمنی سے درآمد شدہ جیو میمبرین اور ٹیکسٹائل ممبرین بچھانے کاعمل بھی شروع کیا جا چکا ہے جن کا مقصد بعد ازاں سائٹ کے زیرِ زمین حصے اور پانی کو ڈمپ کئے جانے والے کوڑاکرکٹ کے مہلک اثرات سے محفوظ رکھنا ہے ان تعمیراتی سرگرمیوں کا اسی برس مارچ میں آغاز کیا گیا جن میں سے ایڈمن بلاک، ورکشاپ، پارکنگ ایریا، رابطہ سڑکوں اور لیچٹ پول کی تعمیر اور پائپنگ کا عمل دو ماہ میں مکمل کئے جانے کا امکان ہے۔لاہورسینیٹری لینڈ فل پروجیکٹ کا آغاز اکتوبر2013 میں ہوا اور پروجیکٹ کا افتتاح وزیرِ اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے کیا تھا۔ ترجمان کے مطابق یہ پروجیکٹ نہ صرف پاکستان بلکہ خطے میں اپنی نوعیت کا پہلا منصوبہ ہے جس پرتقریباً 1 ارب روپے لاگت آئے گی اور سینیٹری لینڈ فل کی تعمیر لاہور میں روزانہ پیدا ہونے والے3000 ٹن کوڑاکرکٹ کو ماحول دوست اور سائنسی طریقے سے ٹھکانے لگانے میں بے حد معاون ثابت ہو گی۔علاوہ ازیں گزشتہ روز منیجنگ ڈائریکٹر ایل ڈبلیوایم سی خالد مجید نے پروجیکٹ پر تعمیراتی کام کی پیش رفت کا جائزہ لینے کے لیے دورہ کیا اور سائٹ پر موجود ترک انجینئرزاور ٹیکنیکل سٹاف سے ملاقات کی۔اس موقع پر نیسپاک انجینئر سیف اللہ نے ایم ڈی ایل ڈبلیو ایم سی کو پروجیکٹ پر ہونے والی پیش رفت پر بریفنگ دی۔ خالد مجید نے جاری تعمیراتی کام پر اظہارِ اطمینان کیا اور پروجیکٹ انچارج اور جنرل منیجر پروکیورمنٹ کرنل طاہر مقبول کو منصوبے کی بروقت تکمیل یقینی بنانے کی ہدایت دی۔ اس موقع پر چیف فنانشل آفیسر رانا عارف، اسسٹنٹ منیجر لینڈ فل ساجد ریاض اور ترک کنٹریکٹر کمپنی چیوکا اور چوہدری انجینئرز کے نمائندگان بھی ان کے ہمراہ تھے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -