پرنسپل محمد ارشد اختر ٹریننگ کی سختی برداشت نہ کرتے ہو ئے انتقال کرگئے

پرنسپل محمد ارشد اختر ٹریننگ کی سختی برداشت نہ کرتے ہو ئے انتقال کرگئے

  

لاہور (ناصرہ عتیق سے) گورنمنٹ ہائر سکینڈری سکول اقبال نگر چیچہ وطنی کے پرنسپل محمد ارشد اختر ڈائریکٹوریٹ سٹاف ڈویلپمنٹ میں ٹریننگ کی سختی برداشت نہ کرسکے اور ٹریننگ افسر کی بے جا ڈانٹ ڈپٹ سے دل برداشتہ ہو کر وفات پا گئے۔ معلوم ہوا ہے کہ ان دنوں پنجاب بھر سے گریڈ18سے19 اور گریڈ19 سے20 میں ترقی حاصل کرنے والے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ افسران وحدت روڈ، لاہور میں واقع ڈی ایس ڈی سنٹر میں دو ماہ کی ٹریننگ پر ہیں، جن میں55،56 سال سے زائد عمر کے50 سے زائد افراد ہیں جن میں خواتین بھی شامل ہیں۔ ڈی ایس ڈی میں ان افسران کے رہنے کا کوئی خاص بندوبست نہیں ہے۔

بالخصوص جو کھانا دیا جاتا ہے وہ انتہائی ناقص ہے۔ شدید گرمی، حبس اور پھر لوڈشیڈنگ، ایسے میں عمر رسیدہ افراد میں قوتِ مدافعت بھی کم ہو جاتی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ ورزش بھی ٹریننگ میں شامل ہے۔ رمضان المبارک میں روزے کی حالت میں دوران ٹریننگ ورزش کے دوران بہت سے افسران کی طبیعت خراب ہو جاتی ہے۔ محمد ارشد اختر کی طبیعت بھی ایسے ہی خراب ہوئی، طبیعت خراب ہونے پرانہیں نہ تو طبعی امداد دی گئی اور نہ ہی کسی ڈاکٹر وغیرہ نے ان کا باقاعدہ چیک اپ کرایا گیا، بلکہ الٹا ٹریننگ افسر انہیں سخت سست اور اس قسم کے دیگر غیر اخلاقی القابات سے نوازتا رہا، جس کے باعث ان کی طبیعت زیادہ بگڑ گئی اور وہ خالق حقیقی سے جا ملے، مرحوم کی چار بچے ہیں، جن میں 3لڑکیاں اور سب سے چھوٹا ایک بیٹا ہے جو کہ ابھی11ویں جماعت میں پڑھتا ہے۔ ٹریننگ کرنے والے محکمہ تعلیم کے افسران اس سانحہ پر غمزدہ ہیں۔ انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ محمد ارشد اختر کی موت کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کرائیں اور محمد ارشد اختر کے اہل کی مالی معاونت کے ساتھ ساتھ ان کے بچوں کی اعلیٰ تعلیم تک کے اخراجات بھی حکومت پنجاب برداشت کرے اور ڈی ایس ڈی سنٹر میں ٹریننگ کے لئے آنے والوں کے قیام و طعام سمیت ان کے کھانے پینے کے بہترین انتظامات کئے جائیں۔ عمر رسیدہ بالخصوص بیمار افراد کو ٹریننگ سے مستثنیٰ قرار دیا جائے تاکہ آئندہ کسی ایسے افسوسناک سانحے سے بچا جا سکے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -