امریکہ میں یوم آزادی جوش و خروش سے منایا گیا

امریکہ میں یوم آزادی جوش و خروش سے منایا گیا

  

واشنگٹن ( اظہر زمان، بیورو چیف) چار جولائی کو پورے امریکہ میں یوم آزادی جوش و خروش سے منایا گیا۔ 1776ءمیں اس روز کانگریس نے” اعلان آزادی “کی دستاویز منظور کی تھی جس کے بعد ہر سال اسے اہم ترین دن کے طور پر منایا جاتا ہے ۔ اس دن واشنگٹن اور دیگر شہروں میں روایت کے مطابق امریکیوں نے اپنے گھروں اور دفتروں میں قومی پرچم لہرائے اور خاندان کے افراد اور دوستوں نے مل کر پکنک منائی اور باربی کیو کے ذریعے دعوتیں کیں۔

واشنگٹن کی تقریبات میں معمول کے مطابق ماضی کے قائدین تھامس جیفرسن ، بنجمن فرینکلن اور جان آدمز کی طرف سے اعلانات پڑھ کر سنائے گے۔ واشنگٹن سمیت امریکہ کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں یوم آزادی کی پیریڈ ہوئی اور رات کو آتش بازی کا مظاہرہ ہوا۔ واشنگٹن کے مرکزی نیشنل مال پر آتش بازی کے ساتھ ایک بہت بڑا کنسٹرٹ ہوا جس میں معروف سنگرز فرینکی والی، پیٹی لیبل اور مائیکل میکڈانلڈ نے وہاں موجود ہزاروں حاضرین کو محظوظ کیا۔

امریکہ کے مشرقی ساحل پر بحراقیانوس میں آنے والے آرتھر نامی طوفان کے باعث بعض مقامات پر یوم آزادی منانے کا سلسلہ بد مزہ ہوا۔ روایتی طور پر چار جولائی کو لوگ ساحلی علاقوں میں جا کر پکنک مناتے ہیں۔ لیکن منگل کے روز فلوریڈا کے قریب سے شروع ہونے والے اس طوفان بادوباراں نے جولائی کی رات شمالی کیرولینا ریاست کے ساحلی علاقے پر لینڈ فال کیا جس کے باعث وہاں پکنک منانے کے لئے آنے والے خاندانوں کو تیزی سے وہاں سے بھاگنا پڑا۔ یہ طوفان اس تحریر کے وقت شمال کی طرف بڑھ رہا ہے ۔ا ور واشنگٹن سے گزر کر نیویارک سے ہوتا ہوا بوسٹن تک جاپہنچا ہے۔ چونکہ طوفان کو زور ٹوٹ گیا ہے ۔ اس لئے یہ زیادہ تباہی کا باعث نہیں بنا۔

مزید :

صفحہ اول -