سنگاپور،بکٹ نما شاپنگ سنٹر میںعورتیں برائے فروخت

سنگاپور،بکٹ نما شاپنگ سنٹر میںعورتیں برائے فروخت

  

سنگاپور (نیوز ڈیسک) ترقی یافتہ ممالک کی صف میں شمار ہونے والے ملک سنگا پور کے ایک بڑے شاپنگ سنٹر کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ وہاں گھریلو استعمال کی دیگر اشیاءکے ساتھ عورتیں بھی بیچی جاتی ہیں۔ الجزیرہ ٹی وی نے اس معاملے کی تحقیق کی تو معلوم ہوا کہ بکٹ نما شاپنگ سنٹر میں واقع ہی عورتیں فروخت کیلئے دستیاب ہیں۔ ان خواتین کو گھریلو ملازمہ کے طور پر بیچا جاتا ہے۔ شاپنگ سنٹر میں جس طرح دیگر اشیاءکی قیمتیں لگی ہیں اسی طرح ان عورتوں کو بھی ایک مخصوص جگہ کھڑا کیا جاتا ہے اور ساتھ لگے بورڈ پر ان کی خوبیاں لکھی ہوئی ہیں۔ اسی طرح کے ایک بورڈ پر لکاھ تھا کہ ”یہاں فلم]ائنی اور انڈونیشیا کی لڑکیاں دستیاب ہیں، یہ کبھی چھٹی نہیں لیتیں اور پیسے بھی کم لیتی ہیں“ اسی طرح اس شاپنگ سنٹر میں ”سستی ملازمہ“ ، ”سمارٹ ملازمہ“ اور ”تابعدار ملازمہ“ کے بورڈ بھی نظر آتے ہیں۔ فلپائن کی لڑکیوں کو عام طور پر ”سماعٹ ملازمہ“ کے طور پر بیچا جاتا ہے جبکہ برما کی لڑکیوں کو ”تابعدار“ کے طور پر فروخت کیا جاتا ہے۔ انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ سنگاپور کے ہمسایہ ممالک فلپائن ، برما اور انڈونیشیا کی لاکھوں غریب لڑکیوں کو گھریلو ملازمہ کے طور پر فروخت کیا جاتا ہے۔ ان لڑکیوں کو نوکری حاصل کرنے کیلئے فیس بھی ادا کرنا پڑتی ہے اور بے پناہ اخراجات اور کم آمدنی کی وجہ سے ہمیشہ اپنے مالکان کے ہاں پھنسی رہتی ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -