الیکشن کمیشن اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کرنیوالی سیاسی جماعتوں کیخلاف کارروائی نہیں کر سکتا

الیکشن کمیشن اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کرنیوالی سیاسی جماعتوں کیخلاف ...

  

                                       لاہور(شہبازا کمل جندران//انویسٹی گیشن سیل) الیکشن کمیشن نوٹیفکیشن جاری کرنے کے باوجود اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کروانے والی سیاسی جماعتوں کے خلاف کسی قسم کی کارروائی نہیں کرسکتا، پولیٹیکل پارٹیز آرڈر 2002کے تحت اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کروانے والی سیاسی جماعت کو واحد سزا یہ دی جاسکتی ہے کہ اسے الیکشن کے لیے انتخابی نشان الاٹ نہ کیا جائے ، لیکن اس سزا سے ملک کی کل 282میں سے اڑھائی سوکے لگ بھگ ایسی سیاسی جماعتیں خوفزدہ نہیں ہونگی۔جو الیکشن لڑتی ہی نہیں۔ معلوم ہواہے کہ الیکشن کمیشن نے ملک کی تمام سیاسی جماعتوںسے 29اگست تک اثاثوں کی تفصیلات طلب کرلی ہیں۔ ، پولیٹیکل پارٹیز آرڈر 2002کے سیکشن 13اور پولیٹیکل پارٹیز رولز 2002کے رول4کے تحت ہر سیاسی جماعت پر لازم ہے کہ وہ مالی سال کے اختتام کے بعد 60یوم کے اندر اپنے فنڈز کے ذرائع ، اپنے اثاثہ جات کی تفصیلات اور مالی ذمہ داریوں کی تفصیلات الیکشن کمیشن کو پیش کریگی ۔ یہ تفصیلات چارٹرڈ اکاﺅنٹنٹ کی تیار کردہ رپورٹ پر مشتمل ہونگی۔ جو پارٹی کے سربراہ کے سرٹیفکیٹ کے ہمراہ پارٹی کا کوئی نمائندہ الیکشن کمیشن کو پیش کریگا۔ اور ایسا نہ کرنے والی سیاسی جماعت کو انتخابی نشان الاٹ نہیں کیا جائیگا۔ لیکن ذرائع سے معلوم ہواہے کہ ملک میں مجموعی طورپر282سیاسی جماعتیں الیکشن کمیشن کے پاس رجسٹرڈ ہیں ۔ لیکن ان میں سے محض 30سے 40سیاسی جماعتیں ہی الیکشن میں حصہ لیتی ہیں۔ اور ان میں بھی قومی سطح پر الیکشن لڑنے والی جماعتوں کی تعداد10سے 20ہے۔اوربقیہ اڑھائی سو سے زائدسیاسی جماعتیں عام انتخابات میں حصہ ہی نہیں لیتی ایسی صورت میں انہیں اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کروانے پر انتخابی نشان الاٹ نہ بھی کیا جائے تو انہیں کچھ فرق نہیں پڑتا ، الیکشن کمیشن کے پاس رجسٹرڈ لیکن غیر فعال سیاسی جماعتوں میں پاکستان راہ حق پارٹی، روشن پاکستان لیگ ، پاکستان پیپلز الائنس،تحریک وفاق پاکستان، پاکستان بیسک رائٹس موومنٹ، پاکستان دھرتی ماں پارٹی، جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی ،پاکستان مدر لینڈ پارٹی، جیوے پاکستان پارٹی، لوئر مڈل پارٹی ، پاکستان قومی تحریک آزادی، مستقبل پاکستان، پاسبان ، پاکستان امن پارٹی، غریب عوام پارٹی، پاکستان فاطمہ جناح مسلم لیگ ، تحریک جمہوریت پاکستان،تحریک وفاق پاکستان، پنجاب نیشنل فرنٹ، پنجاب نیشنل پارٹی، پاکستان پرگریسو پارٹی،پاکستان شیعہ پولیٹیکل پارٹی، پاکستان اتحاد تحریک،پاکستان ہموطن پارٹی، پاکستان مقصد حمایت تحریک، مہاجر اتحاد تحریک،محب وطن نوجوان انقلابیوں کی انجمن اور پاکستان یونائیٹڈ انقلاب پارٹی سمیت دیگر جماعتیں شامل ہیں۔ جو الیکشن کمیشن کے ایسے احکامات یا نوٹیفکشنز کو خاطر میں لاتی ہی نہیں۔

 الیکشن کمیشن

مزید :

صفحہ آخر -