امریکہ نے عراق کے 40 ارب ڈالر ہڑپ کر لئے

امریکہ نے عراق کے 40 ارب ڈالر ہڑپ کر لئے
امریکہ نے عراق کے 40 ارب ڈالر ہڑپ کر لئے
کیپشن: America

  

بغداد (نیوز ڈیسک) امریکہ ایک طرف تو عراق کا سب سے بڑا خیر خواہ اور محافظ بنا ہوا ہے اور دوسری طرف اس تباہ حال ملک کے 40 ارب ڈالر (تقریباً 40 کھرب روپے) ہضم کرنے کے چکر میں ہے لیکن عراقی حکام نے بھی اس عزم کا اظہار کردیا ہے کہ وہ اپنی رقم امریکہ کے پیٹ سے نکال کرہی دم لیں گے۔ عراق نے 18 عدد F-16 جنگی جہاز اور 24 عدد اپاچی ہیلی کاپٹر خریدنے کیلئے امریکہ کو 40ارب ڈالر ادا کئے تھے لیکن بظاہر عراق کا مددگار بننے والے امریکہ نے حیلے بہانوں کے ذریعے یہ رقم ہضم کرنے کا تہیہ کررکھا ہے اور یہ مضحکہ خیز موقف اپنا رکھا ہے کہ یہ جنگی ہتھیار شدت پسندوں کے ہاتھوں میں جاسکتے ہیں۔ دوسری جانب عراقی حکام کا کہنا ہے کہ امریکہ جان بوجھ کر عراق کی مدد نہیں کررہا۔ عراق کی سیکیورٹی اینڈ ڈیفنس کمیٹی کے رُکن حکیم الزاملی کا کہنا ہے کہ امریکہ نے رقم لینے کے باوجود جنگی جہاز اور دیگر دفاعی سامان نہ دے کر معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کررہا ہے اور جان بوجھ کر عراقی فوج کو دہشت گردوں کے مقابلے کی صلاحیت سے محروم رکھنا چاہتا ہے۔ عراق نے اپنے نام نہاد دوست امریکہ کی بے ایمانی سے مایوس ہوکر بالآخر پچھلے ماہ روس سے 10 عدد سکوئی جنگی جہاز خرید لئے ہیں جنہیں شدت پسندوں کے ٹھکانے تباہ کرنے کیلئے استعمال کیا جائے گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -