بھارتی انتہاء پسندی کی مثال نہیں ملتی، شوبز شخصیات

بھارتی انتہاء پسندی کی مثال نہیں ملتی، شوبز شخصیات

  

لاہور(فلم رپورٹر) شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ بھارت جیسی انتہاء پسندی کی مثال پوری کائنات میں کہیں ملتی جو بھی شخص وہاں حق بات کرتا ہے اسے غدار قرار دے دیا جاتا ہے موودی سرکار کشمیر میں مظالم کی ایک نئی داستان رقم کررہی ہیشاہد حمید،معمر رانا،مسعود بٹ،حسن عسکری،شانسید نور،میلوڈی کوئین آف ایشیاء پرائڈ آف پرفارمنس شاہدہ منی،صائمہ نور،میگھا،ماہ نور،انیس حیدر،ہانی بلوچ،یار محمد شمسی صابری،سہراب افگن،عذرا آفتاب،حنا ملک،انعام خان،فانی جان،عینی طاہرہ،عائشہ جاوید،میاں راشد فرزند،سدرہ نورچنگیز اعوان،حسن مراد،حاجی عبد الرزاق،حسن ملک،عتیق الرحمن،اشعر اصغر،آغا عباس،صائمہ نور،خرم شیراز ریاض،خالد معین بٹ،مجاہد عباس،ڈائریکٹر ڈاکٹر اجمل ملک،کوریوگرافر راجو سمراٹ،صومیہ خان،حمیرا چنا،اچھی خان،شبنم چوہدری،محمد سلیم بزمی،سفیان،انوسنٹ اشفاق،استاد رفیق حسین،فیاض علی خاں،پروڈیوسر شوکت چنگیزی،ظفر عباس کھچی،ڈی او پی راشد عباس،پرویز کلیم،نیلم منیر خان،حمیرا،عروج،عینی رباب اور نجیبہ بی جی نے کہا کہ بھارت میں بسنے والے چند اچھے لوگوں نے سچ بول کر انسانیت کی لاج رکھی ہے اس بات میں کوئی شک نہیں کہ اسے اس کی بھاری قیمت چکانا پڑے گی کہا کہ بھارت میں سچ اور حق بات کرنے والوں کو سخت ناپسندتا ہے۔

مزید :

کلچر -