بنوں کے عوام کیلئے محبتیں چھوڑ کر جارہا ہوں،ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر

بنوں کے عوام کیلئے محبتیں چھوڑ کر جارہا ہوں،ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر

  

بنوں (بیورورپورٹ)بنوں سے ٹرانسفر ہونے والے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر بنوں یاسر آفریدی نے پولیس فورس کی جانب سے اپنے اعزاز میں دی گئی الوداعی پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ بنوں کے عوام کیلئے محبتیں چھوڑ کر جارہا ہوں اور بنوں کے عوام کی جانب سے محبتیں سمیٹ کر جارہا ہوں یہی میرے لئے فخر کی بات ہے بنوں کی پولیس شیر جیسی پولیس ہے اورمجھے فخر ہے کہ بنوں میں طویل عرصے تک میں نے ملک کی بہادر ترین فورس کی قیادت کی پولیس کے دو ہاتھ ہیں ایک وردی اور دوسرا عوام اگر پولیس کا رویہ عوام کے ساتھ مشفقانہ ہوگا اور پولیس عوام کا اعتماد حاصل کرتی ہے تو پولیس کیلئے کسی بھی قسم کی چیلنج سے نمٹنا مشکل کام نہیں،بنوں میں بحثیت ڈی پی او اگر میں نے کسی پولیس آفسیر پر غصہ کیا ہو یا سختی کی تو وہ ان سے میرا کوئی ذاتی عناد نہیں تھا بلکہ انکی بہتری کیلئے کیا ہوگا انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف بنوں کی پولیس،عوام اور سیکورٹی فورسز سمیت قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں نے جو قربانیاں دی ہیں وہ ناقابل فراموش ہیں بنوں سے خوشگوار یادیں لیکر جارہا ہوں دنیا گول ہے انشاء اللہ زندگی رہی تو دوبارہ بنوں کے عوام کی خدمت کرنا اپنے لئے اعزاز سمجھوں گا بنوں کے عوام کی مہمان نوازی،بہادری اور عزت کو کبھی نہیں بھولوں گا ٹرانسفر پوسٹنگ ملازمت کا حصہ ہے انہوں نے بنوں پولیس کو تلقین کی کہ وہ ہمیشہ عوام کے ساتھ رابطے رکھیں اور جو رابطے ہم نے بحال کئے ہیں اسے ختم نہ کریں،بنوں پولیس کی بہادری کی تعریف نہ کرنا زیادتی ہوگی،انہوں نے کہا کہ میری بیمار والدہ کیلئے بنوں کے عوان نے جو دعائیں کیں،روزے رکھے اور ختم قرآن کا اہتمام کیا اسکے طفیل میری والدہ صحتیاب ہوگئی اور اسی وجہ سے بھی میں بنوں کے عوام کے ساتھ کبھی بھی رابطہ نہیں توڑوں گا۔اس موقع پر ڈی ایس پیز ریاض خان،سرداد خان،شاہد عدنان،ایس ایچ اوز مجید مروت،بنیامین خان،خنان مروت،صبور خان،رحمت اللہ خان،نور اطلس خان،آصف حسن،آصف زادہ وزیر،سرکل آفیسر وزیر سب ڈویژن ملک شیر اکبر خان،حکمت وزیر،حفیظ الرحمن ودیگر وپولیس آفسرا ن نے ٹرانسفر ہونے والے ڈی پی او یاسر آفریدی کو پھولوں کے ہار پہنائے،تحائف پیش کئے اور ان کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔اس موقع پر بنوں پریس کلب کے سابق صدر عمران علی ناشادؔ۔عامر خان ودیگر سوشل میڈیا کے نمائندے بھی موجود تھے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -