چیف سیکرٹری ڈاکٹر کاظم نیاز کا ہیڈ کوارٹر ہسپتال لنڈی کوتل کا دورہ

  چیف سیکرٹری ڈاکٹر کاظم نیاز کا ہیڈ کوارٹر ہسپتال لنڈی کوتل کا دورہ

  

ؐخیبر (بیورورپورٹ)چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ہ کا لنڈیکوتل کا دورہ ہیڈکوارٹر ہسپتال میں کورونا وائر س کے خلاف فرنٹ لائن پر ڈیوٹیاں کرنے والے طبی عملے کوتوصیفی سرٹیفیکٹ دینے میں مکمل طور نظر انداز کیا جبکہ دور افتادہ علاقہ بازار ذخہ خیل میں کورونا وائر س کے خلاف لڑنے والے طبی عملے سمیت محرروں اور پولیس کو بھی نظر انداز کیا سوشل میڈیا پر طبی عملے اور دوسرے سر کاری اہلکاروں کی ڈی سی خیبر محمود اسلم چیف سیکرٹری پر شدید تنقید،ڈاکٹروں،پیر امیڈیکس اور نرسز کو نظر انداز کر نا سمجھ سے بالاتر ہیں،سابق قبائلی اضلاع پیر امیڈیکس ایسوسی ایشن صدر فضل الرحما ن آفریدی چیف سیکرٹری خیبر پختونخواہ ڈاکٹر کا ظم نیاز نے لنڈیکوتل ہسپتال میں منعقدہ تقریب میں کورونا وائر س کے خلاف ڈیوٹیاں کر نے والے اہلکاروں میں توصیفی اسنا د تقسیم کئے گئے توصیفی سرٹیفیکٹ زیا دہ تر پولیس اور سول انتظامیہ کے اہلکاروں کو دئیے گئے جبکہ فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹروں اور پیرامیڈیکس نرسز کو مکمل طور پر نظرا نداز کیا گیا جبکہ دور افتادہ علاقہ بازار ذخہ خیل،لوئے شلمان شین پوخ میں ڈیوٹیاں کرنے والے طبی عملے سمیت محرروں کو نظر انداز کیا گیا جبکہ لنڈیکوتل ہسپتال کے تین ڈاکٹرز اور تین پیر امیڈیکس اہلکار وں کے کورنا وائر س وباء کے دوران او پی ڈی میں ڈیوٹیاں کر رہے تھے انکے ٹیسٹ رزلٹ مثبت آگئے تھے جبکہ ایک ڈاکٹر کی بیوی جاں بحق ہو گئی جبکہ ایک بیٹا اور ایک بیٹی کورونا وائر س کی شکار ہو گئے تھے انکو بھی توصیفی سرٹفیکیٹ میں نظر انداز کیا گیا اس حوالے سے قبائلی اضلاع پیرامیڈیکس کے سابق صدر فضل الرحمان آفریدی اور ضلع خیبر کے صدر مجیب الرحمان آفریدی نے بتا یا کہ ڈی سی خیبر کے کہنے پر سرٹیفیکٹ تقسیم کئے گئے انہوں نے اپنے عملے کو سرٹیفکیٹ دئیے جبکہ قربانی دینے والے طبی عملے کو مکمل طور پر نظر انداز کیا گیا انہوں نے کہا لنڈیکوتل ہسپتال کے ڈاکٹرز،پیرا میڈیکس اور نرسز نے وائرس کے دوران فرنٹ لائن پر لڑرہے ہیں بلکہ وہ تمام طبی عملہ جنہوں نے فرنٹ لائن ڈیوٹیاں دی تھی وہ تقریب میں موجود تھے لیکن انکی حوصلہ افزائی نہیں کی گئی انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف طبی عملے کو سیلوٹ کرنا دھوکہ ہے عملی طور پر کچھ نہیں کیا گیا ڈی سی خیبر محمود اسلم کی موجودگی میں طبی عملے کی حوصلہ افزائی ناممکن ہیں انہوں نے کہا کہ آج کی منعقدہ تقریب کی بھر پور مذمت کر تے ہیں جبکہ دوسری طرف سول انتظامیہ کے بعض محرورں اور پولیس کے اہلکاروں نے بھی سرٹیفیکٹ نہ دینے پر خفگان کا اظہار کیا بلکہ سوشل میڈیا پر کھل کر ڈی سی خیبر اور چیف سیکرٹری پر تنقید بھی کیا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -