سرکاری نرخنامے کو نظر انداز کرنے پر مزید 17 گرانفروش گرفتار

سرکاری نرخنامے کو نظر انداز کرنے پر مزید 17 گرانفروش گرفتار

  

پشاور(سٹی رپورٹر) محکمہ خوراک نے سرکاری نرخنامے کو نظر انداز کرنے پر مزید 17 گرانفروشوں کو حراست میں لے لیا۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر خوراک الحاج قلندر لودھی‘ سیکرٹری خوراک نثار احمد اور ڈائریکٹر محکمہ خوراک محمد زبیر کی ہدایت پر راشننگ کنٹرولر پشاور آفتاب عمر کی زیر نگرانی اسسٹنٹ فوڈ کنٹرولرز تسبیح اللہ‘ نعمان عامر اور فوڈ انسپکٹر محسن علی شاہ نے ورسک روڈ‘ کبابیان‘ فقیر آباد‘ امجد آباد‘ ریگی‘ ناصر باغ حیات آباد فیز فور میں انصاف مارکیٹ‘ انڈسٹریل کالونی‘ لیبر کالونی اور دیگر ملحقہ علاقوں میں عام شہری کے روپ میں فوڈ پوائنٹس میں اشیائے خوردونوش کی خریداری کی اور نرخوں بارے آگاہی حاصل کی بعد ازاں محکمہ خوراک کے افسران نے سرکاری نرخنامے سے تجاوز کرنے پر 17 افراد کو دھرلیا جن میں سبزی و پھل فروش‘ دودھ فروش‘ بیکری مالکان‘ جنرل سٹور مالکان اور دیگر شامل ہیں۔ راشننگ کنٹرولر پشاور آفتاب عمر نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پشاور کو گرانفروشوں سے صاف کر کے ہی دم لیں گے کیونکہ محکمہ خوراک کے گرانفروشوں کا قلع قمع کرنے کا تہیہ کرلیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ خوراک کے افسران شہریوں کو معیاری اور سرکار کی جانب سے مقرر کردہ نرخوں پر اشیائے خوردونوش کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے شہر کے تمام علاقوں میں کارروائیاں کرنے میں مصروف عمل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گرانفروش کسی صورت میں بھی محکمہ خوراک کے شکنجے سے نہیں بچ سکتے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -