خیبر پختونخوا ،مختلف اضلاع کے 89 علاقوں سے سمارٹ لاک ڈاؤن کیوں ہٹایا گیا؟

خیبر پختونخوا ،مختلف اضلاع کے 89 علاقوں سے سمارٹ لاک ڈاؤن کیوں ہٹایا گیا؟
خیبر پختونخوا ،مختلف اضلاع کے 89 علاقوں سے سمارٹ لاک ڈاؤن کیوں ہٹایا گیا؟

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے مختلف اضلاع کے 214  میں سے 89 متاثرہ علاقوں سے سمارٹ لاک ڈاون ہٹادیا گیا ہے۔

صوبائی وزیر اطلاعات کے مطابق جون کے وسط میں لگائے گئے لاک ڈاؤن کی مدت پوری ہونے پر بہت سے علاقوں سے ہٹا دیا گیا ہے۔

مشیر اطلاعات خیبر پختونخوا اجمل وزیرکا کہنا تھا کہ متاثرہ علاقوں میں متاثرہ افراد کی تعداد 2 ہزار 410 ریکارڈ کی گئی ہے۔ اسی طرح سمارٹ لاک ڈاون کی وجہ سے 8 لاکھ 5 ہزار877 افراد گھروں تک محدود ہیں۔:وزیراعلیٰ پختونخوا کی ہدایات پر چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ان سمارٹ لاک ڈاؤن والے علاقوں میں انتظامات کی نگرانی کررہے ہیں۔

اجمل وزیر کے مطابق سمارٹ لاک ڈاؤن کے حوصلہ افزاء نتائج سامنے آرہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا سمارٹ لاک ڈاؤن کی وجہ سے کسی کا روزگار یا کاروبار زندگی متاثر نہیں ہورہا کیونکہ یہ مخصوص علاقے تک محدود ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ صوبے کے ساتوں ڈویژن میں کیسز کی شرح کو مانیٹر کرکے سمارٹ لاک ڈاؤن لگایا جارہا ہے۔ان کا کہنا تھا مختلف اضلاع کے 89 علاقوں سے سمارٹ لاک ڈاؤن ہٹا دیا گیا ہے۔ ان علاقوں میں 677 افراد کورونا سے متاثر تھے۔ جس کے بعد وہاں 35 ہزار 752 افراد کی نقل و حرکت محدود کی گئی تھی۔

جن علاقوں سے لاک ڈاؤن ہٹایا گیا ہے ان میں ضلع نوشہرہ کے کل 15 علاقے، باجوڑ کے 12 علاقے، ایبٹ آباد کے 8 علاقےشامل ہیں۔ ان کے علاوہ بنوں کے 2 علاقے، بونیر کے 4 علاقے، چارسدہ کے 4 علاقے، چترال اپر کے 2 ، مرادن کے 5 علاقے اور پشاور کے 4 علاقوں سے اب تک سمارٹ لاک ڈاؤن ہٹایا گیا ہے۔ اسی طرح جنوبی وزیرستان کا ایک علاقہ اور سوات کے تین علاقوں سے بھی سمارٹ لاک ڈاؤن ہٹایا گیا ہے۔

مزید :

قومی -علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -کورونا وائرس -