امریکا کے صدارتی امیدوار جو بائیڈن کی زبان پھر پھسل گئی، خود کو جوبائیڈن کا شوہر کہہ بیٹھے

امریکا کے صدارتی امیدوار جو بائیڈن کی زبان پھر پھسل گئی، خود کو جوبائیڈن کا ...
امریکا کے صدارتی امیدوار جو بائیڈن کی زبان پھر پھسل گئی، خود کو جوبائیڈن کا شوہر کہہ بیٹھے

  

نیویارک(ویب ڈیسک) امریکا کے صدارتی امیدوار جو بائیڈن کی زبان پھر پھسل گئی، سابق نائب صدر خود کو جِل بائیڈن کا شوہر کہنے کے بجائے جوبائیڈن کا شوہر کہہ بیٹھے، تاہم منہ سے الفاظ غلط ادا ہونے کے باوجود صدرٹرمپ کے مقابلے میں انکی مقبولیت اب بھی زیادہ ہے۔

ستتربرس کے جوبائیڈن نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر تقریب میں شرکت کی ، اسے نیشنل ایجوکیشن ایسوسی ایشن نے منعقد کیا تھا، تقریب کی میزبان نے بائیڈن کا تعارف کراتے ہوئے شرکا کو بتایا کہ جل بائیڈن خود بھی اسی ایسوسی ایشن کی رکن رہی ہیں۔

بائیڈن اسکرین پر آئے تو اپنی بیوی کا نام لے کر یہ کہنے کی بجائے کہ وہ جل بائیڈن کے شوہر ہیں، یہ کہہ دیا کہ وہ جو بائیڈن کے شوہر ہیں، انہیں زبان پھسلنے کا احساس تک نہ ہوا اورغلطی درست نہ کی۔فاکس نیوز کے مطابق صدر ٹرمپ کی مقبولیت اڑتیس جبکہ بائیڈن کی مقبولیت 50 فیصد ہے۔

واضح رہے کہ مارچ میں بھی بائیڈن کی زبان اس وقت پھسل گئی تھی جب وہ امریکا کے اعلان آزادی پربات کررہے تھے۔مئی میں ایک اورتقریب سے خطاب میں بھی وہ سچائی اور حقیقت کے معنوں میں تفریق نہ کرسکے تھے۔

جوبائیڈن کی انہی غلطیوں کی وجہ سے صدرٹرمپ انہیں نیند میں دھت شخص کہہ کر پکارتے رہے ہیں، ری پبلکنزان کیخلاف اشتہاربھی جاری کرچکے ہیں۔صدرٹرمپ نے پچھلے ہفتے ہی کہا تھا کہ جوبائیڈن کو اپنا ٹیسٹ کرالینا چاہیے، لیکن یہ طے ہے کہ وہ پاس ہوں گے نہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -