چارٹر آف کراچی میں ضلعی حکومتوں کی حمایت کی گئی،فیصل سبز واری

چارٹر آف کراچی میں ضلعی حکومتوں کی حمایت کی گئی،فیصل سبز واری

  

کراچی(این این آئی)متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے رہنماسینٹر فیصل سبزواری نے کہاہے کہ سال 2007 کے بعد صوبائی فنانس کمیشن نہیں آیا، صوبائی فنانس کمیشن میں ریونیو کی بنیاد پر وسائل نہیں دیئے جاتے۔ مقامی ہوٹل میں سیو کراچی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سنیٹرفیصل سبزواری نے کہا کہ گزشتہ سال کارپوریٹ پاکستان گروپ کے چارٹر آف کراچی سے سو فیصد اتفاق کرتے ہیں، چارٹر آف کراچی میں ضلعی حکومتوں کی حمایت کی گئی۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے ضلعی حکومت کے بجائے لوکل باڈی کا قانون دیا، سیوریج اور سڑکوں کی مرمت کا اختیار صوبائی محکمہ بلدیات کے پاس ہے۔انہوں نے کہا کہ چار برس سے لوکل گورنمنٹ سے متعلق درخواست زیر التوا ہے، مردم شماری میں جان بوجھ کر غلطیاں کی گئی ہیں، شہر کے 14494 رہائشی بلاکس ہیں۔سنیٹرفیصل سبزواری نے کہا کہ حکومت کے اپنے کاغذات کے مطابق جہاں ایک آدمی نہیں رہتا وہاں 300 ووٹ ہیں، نئی مردم شماری کا اعلان کروا چکے ہیں، وقت سے پہلے مردم شماری کی جائے۔رہنما ایم کیو ایم نے کہا کہ صوبائی فنانس کمیشن پر بات کی جائے، خدمات پر جنرل سیلز ٹیکس میں 38 نئے ٹیکس لگے ہیں، انفرا اسٹرکچر سیس کی مد میں 65 ارب روپے جمع ہوئے، شہر کا پراپرٹی ٹیکس بھی صوبہ جمع کرتا ہے۔

فیصل سبزواری

مزید :

صفحہ آخر -