اسرائیل ککی سیز فائر کے باوجود غزہ پر چوتھی بار بمباری، نابلس میں فلسطینی شید

اسرائیل ککی سیز فائر کے باوجود غزہ پر چوتھی بار بمباری، نابلس میں فلسطینی ...

  

غزہ(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) اسرائیلی جنگی طیاروں نے غزہ کے علاقے میں ایک بار پھر فضائی بمباری کی جس میں ایک عمارت کو نشانہ بنایا گیا۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق رات گئے اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے غزہ میں حماس کے دفاتر پر بمباری کی۔ غزہ میں سیز فائر کے باوجود اسرائیل جارحیت سے باز نہیں آرہا ہے۔اسرائیلی فوج کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ حماس نے غزہ سے 4 آتش گیر غباروں سے حملہ کیا۔ یہ غبارے کھیتوں میں گرے جس سے فصلوں میں آگ لگ گئی۔اسرائیلی فوج کے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ آتش گیر غباروں کے حملے کے جواب میں جنگی طیاروں نے غزہ میں حماس کی اسلحہ ساز فیکٹری اور راکٹ لانچنگ سائٹ پر بمباری کرکے تباہ کردیا۔اسرائیلی طیاروں کی بمباری میں جانی نقصان نہیں ہوا تاہم سیز فائر کے بعد سے یہ اسرائیل کا یہ چوتھا فضائی حملہ ہے جس کے لیے ہر بار اسرائیل نے آتش گیر غباروں کا بہانہ بنایا ہے تاہم ایک بار بھی ثبوت پیش نہ کرسکا۔دوسری جانب مغربی کنارے کے شہر نابلس کے ایک گاوں میں اسرائیلی پولیس اور یہودی آباد کار کی فائرنگ سے ایک فلسطینی نوجوان شہید اور 3 زخمی ہوگئے۔ زخمیوں میں سے ایک حالت کی نازک بتائی جارہی ہے۔۔ ادھر اسرائیل کے سابق وزیر اعظم نیتن یاہو کے مخالف بائیں بازو سے تعلق رکھنے والوں نے غاصب صیہونی حکومت کے صدر اسحاق ہرتزوگ کے گھر کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اوران کیخلاف نعرے لگا ئے۔ مظاہرین اسرائیل کے سابق وزیراعظم نیتن یاہو کے ترجمان ناؤر ایہایا کو صدارتی ترجمان کے عہدے پر فائز کرنے کیخلاف مظاہرہ کر رہے تھے۔ مظاہرین کا کہنا تھا صدر نے سابق وزیراعظم نیتن یاہو کے ایک انتہا پسند دوست کو اس عہدے پر تعینات کیا اور ان کی برطرفی تک احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری رہے گا۔ادھر مغربی کنارے میں ایک مرتبہ پھر ہزاروں افراد نے فلسطینی صدر محمود عباس کیخلاف احتجاج کیا ہے۔ مظاہرین محمود عباس کے مستعفی ہونے کیلئے نعرے بلند کر رہے تھے۔ رملہ میں اِن مظاہروں کا آغاز فلسطینی حکومت کے معروف ناقد نثار بنات کی ہلاکت کے بعد ہوا ہے۔ تینتالیس سالہ نثار کو ڈیڑھ ہفتہ قبل گرفتار کیا گیا تھا اور وہ پولیس کی تحویل میں ہلاک ہو گئے تھے۔ 

اسرائیل

مزید :

صفحہ اول -