5جولائی تاریخ کا سیاہ دن تھا‘ روبینہ خالد

  5جولائی تاریخ کا سیاہ دن تھا‘ روبینہ خالد

  

پشاور (سٹی رپورٹر)پاکستان پیپلزپارٹی خیبرپختونخواکی سینئررہنماسینیٹرروبینہ خالد نے 5 جولائی کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ جنرل ضیاء الحق کے بوئے ہوئے بیجوں کا کڑوا پھل بطور قوم ہم آج بھی بھگت رہے ہیں اس ڈکٹیٹر کے ہاتھوں تباہ ہونے والے ہمارے سیاسی، انتظامی اور آئینی ڈھانچے کو درست کرنے میں اس قوم کو دہائیوں انتظار کرنا پڑا لیکن قوم گواہ ہے کہ ڈکٹیٹر ضیاالحق کے تباہ کن اقدامات کا مکمل ازالہ آج بھی ممکن نہیں ہو سکا۔روبینہ خالد نے کہاکہ 5 جولائی 1977تاریخ کا ایک سیاہ دن ہے جس نے معاشرے میں بگاڑ پیدا کیا اس دن نہ صرف آئین سے انحراف کرکے جمہوریت پر شب خون مارا گیا بلکہ معاشرے میں لسانی وفرقہ وارانہ تعصب کے ساتھ کلاشنکوف کلچر.ہیروئن کی لعنت اور عدم برداشت کے زہر کو فروغ دیا گیاانہوں نے مزید کہاکہ آمریت جس روپ میں بھی ہو وہ در اصل استعماری قوتوں کی آلہ کار ہوتی ہے اور اس کے نزدیک قومی اور ملکی مفاد کی حیثیت ہمیشہ ثانوی رہی ہے ضیا الحق نے ملک کو استعماری قوتوں کے ہاتھوں یرغمال بنائے رکھا، اس کے وسائل کو ان کے حق میں استعمال کیا اور سیاچن گلیشیئر پلیٹ میں رکھ کر دشمن کے حوالے کیا مگر غیروں کے مفاد کی جنگ میں اپنے ملک اور اپنے خطے کی پرواہ تک نہ کی۔انہوں نے کہا کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو کی پاکستان کیلئے خدمات ناقابل فراموش ہیں لیکن ان کا یہ کارنامہ کہ انھوں نے پاکستان کو ایٹمی قوت بنانے کی بنیاد رکھ کر قوم کو بھارت کے خوف سے آزاد کیا، ہمیشہ سنہرے حروف میں لکھا جاتا رہے گا سینیٹرروبینہ خالد نے واضح کیا کہ تاریخ کا انصاف یہ ہے کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو کا نام آج بھی عوام کے دلوں میں زندہ ہے اور ان کے قاتل کا نام لیوا آج کوئی نہیں پی پی پی آمر کی باقیات کے خاتمے اور حقیقی جمہوریت کے قیام تک جدوجہد جاری رکھے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -