ہنگو پولیس کی کامیاب کاروائی اندھے قتل میں ملوث ملزمان گرفتار

    ہنگو پولیس کی کامیاب کاروائی اندھے قتل میں ملوث ملزمان گرفتار

  

ہنگو (بیورورپورٹ)ہنگو پولیس کی کامیاب کاروائی اندھے قتل میں ملوث ملزمان گرفتارگزشتہ روزپاس کلے کے رہائشی نقی غلام کو ان کی دوکان میں نامعلوم ملزمان نے چاقوسے وار کرکے بیدردی سے قتل کیاتھاجس کی ایف ائی ار تھانہ سٹی میں نامعلوم ملزمان کیخلاف درج کی گئی تھی سٹی پولیس نے پیشہ ورانہ مہارت کا عملی مظاہرہ کرتے ہوئے چوبیس گھنٹوں کے اندر ملزمان کوٹریس کر کے اصل ملزمان کو گرفتار کر لیا واردات میں استعمال ہونیوالاالہ قتل خنجر بھی برامدکرکے قبضے میں لے لیاگیاہے تفصیلات کے مطابق ہنگو پولیس نے گزشتہ روز اپنے دوکان میں قتل کیے جانے والے پاسکلی کے باشندے نقی غلام ولدعباس غلام کے قاتلوں کو گرفتار کر لیاہے ایس ڈی پی او سٹی عرفان خان نے قائمقام  ایس ایچ او سٹی شمیم خان کے ہمراہ ہنگامی پریس کانفرنس کے دوران گرفتار ملزمان کو میڈیا کے سامنے پیش کیا پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایس ڈی پی او عرفان خان نے بتایا کہ گزشتہ روزپاس کلے کے رہائشی نقی غلام کو ان کے دوکان واقع سٹیشن روڈ کے اندر نامعلوم ملزمان نے خنجر کے وار سے بیدردی کیساتھ قتل کیاتھا اورملزمان فرارہونے میں کامیاب ہوگئے تھے اندھے قتل کی اس وردات میں ملوث ملزمان کوٹریس کرنا اوران کی گرفتاری پولیس کے لئے کسی چیلنج سے کم نہ تھی تا ہم ڈی پی او ہنگو اکرام اللہ خان کے زیر نگرانی پولیس نے ان کی قیادت میں اس واقعہ کو ایک ٹسٹ کیس کے طور پر اٹھایا اورچوبیس گھنٹوں کے اندر جدید پیشہ ورانہ مہارت سے اصل ملزمان کو گرفتار کیا جنہوں نے اقبال جرم بھی کر لیا ہے ڈی ایس پی نے بتایا کہ ملزمان وقار احمد ولدشہاب الدین اورمحمد سعودولدعارف ساکنان لختی بانڈہ گزشتہ رات مقتول نقی غلام کے پاس دوکان ائے تھے کھانا کھانے کے بعد مقتول نے دونوں سے ایسا مطالبہ کیا جس کو وہ دونوں پورا نہیں کرسکتے تھے جبکہ زور زبردستی کرنے پردونوں نے ملکرنقی غلام پر چاقو سے وار کرکے اس کوقتل کیااورفرارہوگئے تھے دونوں ملزمان کو تھانہ سٹی میں درج قتل کے ایف ائی ار میں باضابط طور پر نامزد کردیاگیاہے ڈی ایس پی عرفان خان  نے واضح کیا کہ ہنگو کی پولیس پیشہ ورانہ  فرائض کی انجام دہی کے دوران جدید خطوط اور تقاضوں کو استعمال میں لا رہی ہے یہی وجہ ہے کہ ہم اندھے قتل کے کئی واقعات کو ٹریس کر چکے اور ملزمان کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -