اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے عباسیہ کیمپس کو خالی کرانے کے فیصلے پر احتجاج

   اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے عباسیہ کیمپس کو خالی کرانے کے فیصلے پر ...

  

ملتان (سپیشل رپورٹر)سرائیکستان قومی کونسل کے رہنماؤں مسیح اللہ خان جام پوری، ظہور دھریجہ، حاجی عید احمد دھریجہ، ثوبیہ ملک اور افضال احمد نے بہاولپور انتظامیہ کی طرف سے اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے عباسیہ کیمپس کو خالی کرانے کے فیصلے پر احتجاج کرتے ہوئے کہا(بقیہ نمبر39صفحہ6پر)

 کہ وہ حکومت جس نے گورنر ہاؤس اور ایوان وزیر اعظم کو تعلیمی ادارے بنانے کے نعرے پر ووٹ لیے آج برسراقتدار آنے کے بعد تعلیمی اداروں کو خالی کرانے کے در پے ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا یہ فیصلہ بہاولپور کے تعلیمی نظام پر سفاکانہ حملہ ہے آج پنجاب کی بیورو کریسی اسلامیہ یونیورسٹی کے کیمپس پر قبضہ کرنا چاہتی اگر وسیب سے ووٹ لینے والے ایم این اے ایم پی اے اسی طرح خاموش رہے تو کوئی بعید نہیں کہ زکریا یونیورسٹی کے کسی حصے پر بھی انتظامیہ قبضہ کر لے۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ حکومت اپنا فیصلہ واپس لے ورنہ پورے وسیب میں احتجاج ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ آج ہم پوچھتے ہیں کہ اس سفاکانہ فیصلے کیخلاف نواب صلاح الدین عباسی، طارق بشیر چیمہ، ملک فاروق کاظم، مخدوم خسرو بختیار، مخدوم احمد محمود اور وسیب سے تعلق رکھنے والے دیگر عمائدین کیوں خاموش ہیں؟ انہوں نے کہا کہ اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کی ایک تاریخ ہے یہ یونیورسٹی الازہر یونیورسٹی کی طرز پر جامعہ عباسیہ کے نام سے وجود میں آئی تھی اور بہاولپور شہر میں اس کی عالی شان عمارت بہاولپور سٹیٹ کے دور میں بنائی گئی۔ بہاولپور کی عظمت رفتہ کا زندہ ثبوت بھی ہے۔  

مزید :

ملتان صفحہ آخر -