ملتان:مختلف بھٹوں پر ناقص اینٹیں فروخت کرنیکاانکشاف

    ملتان:مختلف بھٹوں پر ناقص اینٹیں فروخت کرنیکاانکشاف

  

ملتان (سپیشل رپورٹر)ملتان میں خشت بھٹہ جات من مانی قیمتوں پر اینٹیں فروخت کرنے لگے گذشتہ ماہ ہونے والی بارش کا بہانہ کر کے بھٹہ مافیہ نے قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ کر دیا۔ حکومت کی طرف سے اول اینٹ کا فی ہزار ریٹ 6800 مقرر ہے لیکن یہ ملتان  میں یہ -/7500 روپے میں فروخت کی جا رہی ہے جبکہ اینٹ کا معیار بھی حکومت کے مقرر کردہ  معیار سے مطابقت نہیں رکھتا۔ دوئم اینٹ سرکاری ریٹ سے -/1000 روپے زائد پر فروخت ہو رہی ہیں۔ملتان میں ٹھٹھی لال، مظفر گڑھ روڑ اور ملز پھاٹک میں واقع بھٹے ناقص اور مہنگی اینٹوں کی فروخت میں (بقیہ نمبر27صفحہ6پر)

سر فہرست ہیں زائد ریٹ پر اینٹوں کی فروخت کے حوالے سے بھٹہ یونین کے رہنما گلزار خان نے کہا کہ بھٹوں کو زک زیک ٹیکنالوجی پر منتقل کرنے کے بعد اس میں کوئلہ کی کھپت زیادہ لگتی ہے جس کی وجہ سے ہم لوگ ابھی بھی اینٹیں نقصان پر  فروخت کر رہے ہیں ان کا مزید کہنا تھا کہ قیمتوں میں مزید  اضافہ کروانے کے لئے ہماری ڈپٹی کمشنر ملتان سے میٹنگ بھی ہو چکی ہے اور ہم قیمتوں میں خاطر خواہ اضافہ کے لئے پر امید ہیں۔ دوسری طرف تحقیق کرنے پر یہ بات سامنے آئی ہے کہ جن ممالک میں زک زیک ٹیکنالوجی استعمال ہو رہی ہے وہاں کوئلے کی کھپت میں تقریباً 30% سے زائد بچت ہوئی ہے اور اینٹوں کی قیمتوں میں خاطر خواہ کمی واقع ہوئی ہے جبکہ ملتان میں بھٹہ یونین ضلعی انتظامیہ کو گمراہ کر کے اینٹیں مزید مہنگی کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔ایک طرف وزیر اعظم کے سستے گھروں کی تعمیر کیلئے ہر محکمہ تعاون کر رہا ہے وہیں دوسری طرف بھٹہ مافیا قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کر کے عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہا ہے۔ عوام نے کمشنر ملتان اور ڈپٹی کمشنر ملتان سے اس معاملے میں فوری ایکشن لینے کی اپیل کی ہے تا کہ اینٹوں کی قیمتوں میں  خود ساختہ اضافہ ختم کرایا جا سکے۔

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -