تاجروں کے مسائل کیلئے حکومت کا ہر دروازہ کھٹکھٹا ئیں گے: صدر کراچی چیمبر 

تاجروں کے مسائل کیلئے حکومت کا ہر دروازہ کھٹکھٹا ئیں گے: صدر کراچی چیمبر 

  

 کراچی(اکنامک رپورٹر) کراچی چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری(کے سی سی آ ئی) کے صدرشارق وہرہ نے کہاہے کہ کراچی کے تاجروں  کے مسائل کے لیے حکومت کا ہر دروازہ کھٹکھٹائیں گے،کاروباری سرگرمیوں کی بہتری کے لیے چھوٹے تاجروں کے ساتھ ہر وقت ساتھ کھڑے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزالیکٹرونکس اینڈ موٹر سائیکل ڈیلرز الائنس کے چیئرمین شیخ حبیب کی سربراہی میں وفد کے ہمراہ کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (کے سی سی آ ئی) کے دورے

 کے موقع پر  وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر کراچی چیمبر کی اسمال ٹریڈرز کمیٹی کے چیئرمین عبدالمجید میمن، کراچی چیمبر میں پولیس چیمبر لائزن کمیٹی کے سربراہ حفیظ عزیز، الیکٹرونکس اینڈ موٹر سائیکل ڈیلرز الائنس کی موٹر سائیکل کمیٹی کے چیئرمین کامران کھوسہ، وائس چیئرمین عبداللہ شاری، جنرل سیکریٹری مرزا واحد، نائب صدر وسیم شریف، لانڈھی کورنگی الیکٹرونس مارکیٹ کے چیئرمین شیخ محمد اکرم، جنرل سیکریٹری شیر علی خان،نائب صدر بشیر احمد، عائشہ منزل الیکٹرونکس مارکیٹ کے محسن زیدی، یو پی موٹر سائیکل مارکیٹ کے نوید رفیق، یو پی پارٹس مارکیٹ کے صدر فرحان احمد، ایم اے جناح روڈ پارٹس مارکیٹ سے فرخ شاہ، سرجانی ٹاؤن الیکٹرونکس مارکیٹ کے نعمان شمس، گلشن حدید الیکٹرونکس مارکیٹ کے صدر حافظ جاوید، پرنٹنگ مارکیٹ کے ایس ایچ علی اور دیگر موجود تھے۔حبیب شیخ نے اس موقع پر کے سی سی آ ئی کے صدر شارق وہرہ کو سفارشات پیش کرتے ہوئے  کہاکہ وفاقی حکومت 70فیصد اور سندھ حکومت 80فیصد ٹیکس کراچی سے ہی حاصل کرتی ہے، اس کے باجود اس شہر کا انفرا اسٹریکچر مکمل طور پر تباہ ہے،دنیا  کے بڑے شہروں میں بجلی سے چلنے والی گاڑیاں متعارف کرائی جارہی ہیں لیکن ہمارے پاس ہر طرف ٹوٹی پھوٹی سڑکوں کا راج ہے، حکومت پبلک ٹرانسپورٹ  فراہم کرنے کے بجائے غریبوں کو موٹر سائیکل سے بھی محروم کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ کراچی دنیا کا واحد بڑا شہر ہے جہاں کے تاجر ٹیکس دینے کے باوجود مسائل کا شکار ہیں،کاروباری مراکز میں آئے روز سیوریج کا گندہ پانی کھڑا ہونے سے کاروباری سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوتی ہیں جبکہ گزشتہ سال بارشوں کی وجہ سے تاجروں کو اربوں روپے کا نقصان ہوا۔ شیخ حبیب نے کہا کہ کراچی کے اولڈ سٹی کے علاقے میں پگڑی کی دکانوں میں کاروبار کرنے والے تاجر شدید پریشان ہیں، حکومت پگڑی کے معاملات کو قانونی شکل دے تاکہ تاجر برادری تحفظ کے ساتھ کاروبار کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت مہنگائی کی وجہ سے ہر شخص موٹر سائیکل کا استعمال کرتا ہے  کیونکہ یہ غریب کی سواری ہے لیکن حکومت کی جانب سے حالیہ بجٹ میں موٹر سائیکل کی قیمت میں کسی قسم کی کمی کا اعلان نہیں کیا گیاجبکہ ڈیوٹیوں میں اضافے کی وجہ سے موٹر سائیکلوں کے نرخوں میں تیزی سے اضافہ ہو ا ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ کی جانب سے موٹر سائیکل کی نمبر پلیٹ کے پیسے بھی چارج کیے جارہے ہیں لیکن نمبر پلیٹ فراہم نہ ہونے کی وجہ سے چوری کی وارداتوں میں اضافہ ہو گیا ہے۔ اس موقع پرکامران کھوسہ نے کہا کہ ہماراکراچی چیمبر سے مطالبہ ہے کہ موٹر سائیکل پر لگنے والی ایکسائیز ڈیوٹی میں کمی کے لیے حکومت سے بات کرے تاکہ موٹر سائیکل کی قیمت میں کمی ہوسکے۔

مزید :

صفحہ اول -