بنگلہ دیش کے بابائے قوم کی سوانح عمری کی کورین زبان میں تقریب رونمائی

بنگلہ دیش کے بابائے قوم کی سوانح عمری کی کورین زبان میں تقریب رونمائی
بنگلہ دیش کے بابائے قوم کی سوانح عمری کی کورین زبان میں تقریب رونمائی

  

سیول( رضا شاہ) شیخ مجیب الرحمن جنہیں بنگلہ دیش کے بابائے قوم کے نام سے جانا جاتا ہے کے یوم پیدائش کے موقع پر کورین زبان میں شیخ مجیب الرحمن کی سوانح عمری شائع کی گئی ہے۔ شیخ مجیب الرحمن کو 1975 میں ان کی حزب اختلاف نے قتل کیا تھا لیکن بنگلہ دیش کے لوگ اب بھی انہیں "بنگلہ دیش کا دوست" کے نام سے یاد کرتے ہیں۔ جنوبی کوریا میں موجود بنگلہ دیش کے سفارتخانے نے دارالحکومت سیول کے ایک بڑے ہوٹل میں کتاب کی رونمائی کی تقریب منعقد کی۔ بنگلہ دیش کی سفیر عابدہ اسلام نے کہا کہ انہوں نے 2019 میں اس کتاب کے لئے کوشش شروع کی تھی اور انہیں خوشی ہے کہ ان کی کوریا میں مدت قیام کے دوران ہی دو سال میں یہ کتاب اب رونمائی کے لئے پیش کی جارہی ہے۔ اس کتاب کا نام "ان فنشڈ میموئیرز" ہے اور یہ 1960 کی دہائی میں شیخ مجیب الرحمن نے تب لکھی تھی جب وہ ایک نوجوان سیاستدان تھے اور قید تھے۔ بنگلہ دیش کی سفیر نے اس موقع پر مزید کہا کہ کوریا اور بنگلہ دیش ایک دوسرے کے بہت اچھے دوست اور اہم ترقیاتی شراکت دار ہیں۔ بنگلہ دیش کی سفیر نے کہا کہ کوریا اور بنگلہ دیش کی آزادی میں بہت مماثلت ہے کیونکہ دونوں ممالک نے بہت جدوجہد کے بعد آزادی حاصل کی اور کوریا کے شہری اس کتاب کو بہت دلچسپ پائیں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -