سستا آٹا نہ ملنے کیخلاف شہریوں کا ڈی سی چوک میں احتجاجی مظاہرہ

سستا آٹا نہ ملنے کیخلاف شہریوں کا ڈی سی چوک میں احتجاجی مظاہرہ

  

چارسدہ(بیورورپورٹ) چارسدہ میں حکومت کی طرف سے اعلان کر دہ سستا آٹا نہ ملنے کے خلاف شہریوں کا ڈپٹی کمشنر چوک میں احتجاج مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے سڑک پر اینٹیں ڈال کر ڈی سی چوک مکمل طور پر بند کر دیا اور حکومت پر شدید تنقید کی۔مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے انتظامیہ نے مقامی فلو ر ملز سے ڈیڑھ سو بیگ منگوا لئے جس کو خریدنے کیلئے سینکڑوں شہری لوڈر گاڑی پر چڑھ دوڑے۔آٹے کے تقسیم کے دوران پولیس کا شہریوں پر تشدد۔ تفصیلات کے مطابق چارسدہ میں شہریوں نے سرکاری آٹے کے عدم دستیابی کے خلاف پولیس سٹیشن سٹی کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا، اس دوران سینکڑوں مظاہرین نے تحصیل بازار میں پولیس سٹیشن کے سامنے پتھر رکھ پر پشاور روڈ کو کئی گھنٹوں کے لئے بند رکھا جس کے بعد انتظامیہ نے فلور ملز سے آٹے منگوا کر مظاہرے کو ختم کیا۔ اس دوران اٹے کے تقسیم کے دوران بھگدڑ مچ گئی جبکہ پولیس کی جانب سے آٹے کے حصول کے لئے قطار نہ بنانے پر شہریوں پر تشدد بھی کیا گیا۔اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ثانیہ صافی کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے فلور ملز کے لئے سرکاری گندم کا کوٹہ انتہائی کم ہے جس کے باعث شہریوں کو سرکاری آٹے کے حصول میں شدید مشکلا ت کا سامنا ہے، اس سے قبل سرکاری آٹے مختلف آٹا ڈیلرز کے ذریعے تقسیم کیا جا تا تھا لیکن اب یہ آٹا ضلعی انتظامیہ کی سربراہی میں ٹرک اور دیگر گاڑیوں کے ذریعے تقسیم کیا جا رہا ہے۔ ثانیہ صافی کے مطابق اس وقت ضلع بھر کے لئے 20کلو آٹے کے 1750بیگز تقسیم کئے جا رہے ہیں جبکہ حکومت کی جانب سے سرکاری گندم کی تعداد بڑھ جانے پر سرکاری آٹے کے بیگز بھی بڑھا دی جائینگے جس پر شہریوں کو آٹے کے حصول میں آسانی ہو گی۔یا د رہے کہ آٹے کے حصول کے دوران بعض شہریوں نے 980کا آٹا ایک ہزار روپے میں ملنے کی بھی شکایت کی۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -