کبیروالا:ڈاکٹرز کی غفلت سے  بچہ جاں بحق، ورثاء کا شدید احتجاج

کبیروالا:ڈاکٹرز کی غفلت سے  بچہ جاں بحق، ورثاء کا شدید احتجاج

  

بارہ میل(نامہ نگار)کبیروالا کے نواحی علاقہ جسوکانواں کے رہائشی غریب مزدور عارف حسین  نے میڈیا سے گفتگو کرتے(بقیہ نمبر48صفحہ7پر)

 ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ روز میرا بیٹا ارسلان عارف جوکہ کھیلتے ہوئے درخت سے گر گیا تھا جسکی معمولی بازو پر چوٹ لگ گئی بچے کو مختصر علالت کے بعد الفلاح جنرل ہسپتال قادر پور راں لے گئے جہاں پر ڈاکٹر عدنان رسول نے کہا کہ مذکورہ بچے کے بازو کا آپریشن ہوگا ہم نے آپریٹ کرنے کا کہا اسی دوران ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ آپریشن بلڈ کے علاوہ ممکن نہیں بچے کو بلڈ لگانا ہوگا اس کے آپکو چار ہزار روپے دینے ہوں گے متاثرہ نے کہا کہ اگر بلڈ کی ضرورت ہے تو ہم ارینج کر لیتے ہیں انہوں نے متاثرین کو ورغلا کر اپنے تازہ بلڈ کی تعریفیں کردی اور کہا کہ بلڈ صرف ہماری لیبارٹری کا ہی لگے گا مجبورا متاثرہ نے ہاں کردی انہوں نے بتایا ہے کہ جب ہسپتال کا عملہ بلڈ لگانے کیلئے آیا تو ہم نے چیک کیا تو بلڈ فریز تھا ہمارے منع کرنے کے باوجود انہوں نے ہماری ایک نا سنی اور بچے کو بلڈ لگا دیا کچھ دیر بعد بچے کی مسلسل حالت تشویشناک ہوتی گئی ہم نے پیرا میڈیکل سٹاف کو بچے کی حالت سے آگاہ کیا مگر انکے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بچے کی سانسیں تنگ ہوتی گئی اور بالآخر نوجوان قصاب صفت ڈاکٹروں کی غفلت و لاپرواہی سے بچہ جان کی بازی ہار گیا متاثرین نے بچے کی وفات پر ڈاکٹر سے نااہلی کا اظہار کیا تو ہسپتال کے عملے نے نعش اور مقتول بچے کے والدین کو اٹھا کر سڑک پر پھینک دیا ہسپتال کے عملے نے متاثرہ کے کپڑے بھی پھاڑ دیئے اور مزید تشدد کا نشانہ بنانے لگے،متاثرہ خاندان نے احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلی پنجاب حمزہ شہباز شریف،کمشنر ملتان اور سیکرٹری ہیلتھ پنجاب  سے فل الفور انصاف کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -