لمپی سکن کی بیماری بنیاد ی طور پر وائرس سے پھیلتی ہے: محکمہ امور حیوانات

لمپی سکن کی بیماری بنیاد ی طور پر وائرس سے پھیلتی ہے: محکمہ امور حیوانات

  

    پشاور(سٹاف رپورٹر)محکمہ اُمورِحیوانات خیبر پختونخوا ضم شدہ اضلاع میں لمپی سکن بیماری کے کنٹرول کیلئے شب وروز کام کر رہا ہے۔گلٹی دار جلد کی بیماری یا لمپی سکن کی بیماری بنیادی طور پر وائرس سے پھیلتی ہے،اور زیادہ تر گا ئے اور بھینس اس سے متاثر ہوتے ہیں۔ اس بیماری سے انسانوں کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔لمپی سکن بیماری نے اس وقت پوری دنیا کو لپیٹ میں لیا ہوا ہے۔ پاکستان بھی اس وقت اس بیماری کی لپیٹ میں ہے۔ پنجاب اور سندھ میں یہ بیماری سب سے پہلے رپورٹ ہوئی جبکہ خیبر پختونخوا میں سب سے پہلے ڈیرہ اسماعیل خان میں یہ بیماری رپورٹ ہوئی۔ضم شدہ اضلاع میں یہ بیماری سب سے پہلے شمالی وزیرستان میں رپورٹ ہوئی۔ ان  خیالات کا اظہار محکمہ امور حیوانات کے ترجمان کی جانب سے جاری ایک بیان میں کیا گیا، اس سلسلے میں بات کرتے ہوئے ترجمان نے کہا کہ پاکستان میں یہ بیماری رپورٹ ہونے کے بعد ڈائریکٹر جنرل لائیو سٹاک خیبر پختونخوا ڈاکٹر عالم زیب اور ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر سجاد وزیر کے ہدایات کی روشنی میں ڈائریکٹوریٹ امورِ حیوانات ضم اضلاع میں ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر ریاض کی سربراہی  میں Disease Reporting Center کا قیام عمل میں لایا گیا  تاکہ بروقت بیماری کے رپورٹ اور احتیاطی تدابیر کو عملی جامہ پہنایا جاسکے۔ یہ سنٹرز روزانہ کی بنیاد پر بیماری کی جامع رپورٹ تیار کرتی ہے۔ابھی تک ضم اضلاع میں لمپی سکن بیماری کے 3766 کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ جن میں  2223  جانور مکمل طور پر صحتیاب ہوچکے ہیں اور  1359 جانور زیر علاج ہیں، جبکہ 184 جانوروں کی اموات رپورٹ ہوئی  ہیں۔ ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ محکمہ امورِ حیوانات ماہرین کے رائے  کے مطابق جہاں جہاں سے بیماری رپورٹ کی گئی ہے،وہاں پر جانوروں کو ویکسین کروا رہے ہیں، اور اب تک 57846  جانوروں کو ویکسین  لگائی جاچکی ہے۔اس کے ساتھ ہر ضلع اور سب ڈویژن میں داخلی راستوں  پر ٹیمیں  تشکیل دی گئی ہیں تاکہ ضلع میں داخل ہونے والے جانوروں اور گاڑیوں پر سپرے کیا جا سکے۔اس  کے ساتھ ضلع بھر میں جانوروں  کی منڈیوں میں بھی روزانہ کی بنیاد پر سپرے جاری ہے۔عوام کی اگاہی کیلئے معلوماتی مواد ہرضلع کے سطح پر دستیاب ہے اور مختلف جگہوں  پربینر آویزاں کئے گئے ہیں، تاکہ عوام میں بیماری کے متعلق آگاہی پیدا کی  جا سکے۔لمپی سکن بیماری اور کانگو بخار کی روک تھام کے لئے محکمہ  لائیوسٹاک نے ضم اضلاع میں 28 چیک پوسٹیں قائم کی ہیں، اور 115 ٹیمیں مویشی منڈیوں میں سپرے اور اگاہی میں مصروف ہیں۔ مجموعی طور پر تقریباً 417 اہلکار اس وقت لمپی سکن کے روک تھام اور ویکسینیشن کے عمل میں مصروف ہیں۔ جبکہ باقی عملہ ہائی الرٹ پر ہے، تاکہ کسی بھی آوٹ بریک کی صورت میں بروقت اقدامات اٹھائے جاسکے۔

مزید :

صفحہ اول -