بشریٰ بی بی کی مبینہ آڈیو، پی ٹی آئی نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کردیا

بشریٰ بی بی کی مبینہ آڈیو، پی ٹی آئی نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کردیا
بشریٰ بی بی کی مبینہ آڈیو، پی ٹی آئی نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کردیا
سورس: Screengrab

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف نے سابق وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کی لیک ہونے والی آڈیو کا فرانزک ٹیسٹ کرانے کا مطالبہ کر دیا۔ایکسپریس ٹربیون کے مطابق تحریک انصاف کے رہنماﺅں فواد چوہدری اور شیریں مزاری نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بشریٰ بی بی کی فون ٹیپ کے فرانزک ٹیسٹ کے بعد پتا چلے گا کہ وہ اصلی ہے یا جعلی۔ سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق کسی کا فون ٹیپ کرنا غیرقانونی ہے۔ ٹیپ کی گئی اس فون کال کو کٹ پیسٹ کیا گیا ہے۔

شیریں مزاری کا اس موقع پر کہنا تھا کہ اس میں کوئی سیاسی بات نہیں ہے۔ ماضی میں ایک حکومت بھی اسی وجہ سے ہٹائی گئی تھی۔ سپریم کورٹ کو عمران خان کے گھر کے فون ٹیپ کیے جانے کا نوٹس لینا چاہیے۔ یہ سب کچھ سازش چھپانے کے لیے کیا جا رہا ہے۔ عمران خان کے گھر کے فون وہی لوگ ٹیپ کر رہے ہیں جو اس حکومت کو لے کر آئے۔

شیریں مزاری نے کہا کہ ہم پوچھنا چاہتے ہیں کہ مریم نواز کو کس حیثیت سے سرکاری کاغذات دکھائے جا رہے ہیں۔ ہم نیوٹرلز اور کرائم منسٹر سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ یہ سب کیوں ہو رہا ہے۔“فواد چوہدری نے اس موقع پر کہا کہ ”فرح بی بی پر بھی الزامات عائد کیے جا رہے ہیں۔ آپ فرح بی بی پر مقدمہ درج کریں تاکہ وہ جواب دیں۔ جب مقدمہ ہی درج نہیں ہوا تو وارنٹ کیسے جاری ہو سکتے ہیں۔ جہاں فرح بی بی کو ایک پلاٹ ملا، وہیں ایاز صادق کو دو پلاٹ ملے۔ کیا ایاز صادق بھی فرح بی بی کے پارٹنر ہیں؟“

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -