پاکستان روس کیساتھ سرمایہ کاری اور تعاون کی نئی جہتیں تلاش کرنا چاہتا ہے : غلام مرتضیٰ جتوئی

پاکستان روس کیساتھ سرمایہ کاری اور تعاون کی نئی جہتیں تلاش کرنا چاہتا ہے : ...

اسلام آباد (اے پی پی) وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار غلام مرتضی خان جتوئی نے کہا ہے کہ پاکستان روس کے ساتھ سرمایہ کاری اور تعاون کی نئی جہتیں تلاش کرنا چاہتا ہے۔ روس پاکستان کی سرمایہ کار دوست پالیسیوں بالخصوص بڑی صنعتوں اور کار سازی میں سرمایہ کاری کے دستیاب مواقع سے استفادہ کرے۔ وزارت صنعت و پیداوار کے بیان کے مطابق غلام مرتضی خان جتوئی نے سینٹ پیٹرزبرگ روس میں روسی وزیر برائے صنعت و تجارت ڈینس منتروو سے ملاقات کی جس کا مقصد دو طرفہ تعاون خصوصا صنعتی تعاون کا فروغ تھا۔ وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار غلام مرتضیٰ جتوئی حالیہ دنوں روس کے سرکاری دورے پر ہیں جہاں وہ روسی وزراء سے ملاقات کے علاوہ سینٹ پیٹرسبرگ میں عالمی اقتصادی فورم میں پاکستان کی نمائندگی کر رہے ہیں۔ ملاقات میں وفاقی وزیر نے روسی وزیر صنعت کو پاکستان کے دورے کی دعوت دی جو انہوں نے قبول کر لی۔ ملاقات میں وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کے دورہ ہائے روس سے متعلق بات چیت بھی ہوئی۔ اس موقع پر روسی وزیر صنعت نے پاکستان کو سخوئی سپر جیٹ پراجیکٹ میں سرمایہ کاری کی پیشکش کی جبکہ انہوں نے وفاقی وزیر کو شمال جنوب پائپ لائن منصوبے ، اس کے ممکنہ معاشی ثمرات اور پاکستان کیلئے سرمایہ کاری کے امکانات سمیت درپیش مسائل سے بھی آگاہ کیا۔ وفاقی وزیر نے پاک چین اقتصادی راہداری، سیاسی و معاشی استحکام، موجودہ حکومتی معاشی پالیسیوں اور بالخصوص آٹو پالیسی کے بارے میں بھی روسی حکام کو آگاہ کیا جس میں انہوں نے گہری دلچسپی کا اظہار کیا۔ وفاقی وزیر سینٹ پیٹرسبرگ کے علاوہ ماسکو کا بھی دورہ کریں گے جہاں وہ اہم حکومتی اہلکاروں اور وزراء سے ملاقاتیں کریں گے۔ ملاقات میں وفاقی وزیر کی معاونت سینٹ پیٹرسبرگ میں مقیم پاکستان کے اعزازی کونسل جنرل رؤف رند اور سینئر پاکستانی سفارتی اہلکار عطاء المنیم شاہد نے کی۔واضح رہے کہ سخوئی سپر جیٹ ایئربس اور بوئنگ کی طرز کا ہوائی جہاز تیار کرنے کا منصوبہ ہے جو آئندہ دو سال میں مکمل ہو گا۔

مزید : کامرس