امریکی انتخابات میں گڑ بڑ کرنے والے ہیکر کہیں بھی ہوسکتے ہیں، روسی صدر

امریکی انتخابات میں گڑ بڑ کرنے والے ہیکر کہیں بھی ہوسکتے ہیں، روسی صدر

واشنگٹن (این این آئی)روسی صدر ولادی میر پوتین نے کہا ہے کہ امریکا میں گذشتہ سال نومبر میں منعقدہ صدارتی انتخابات کے نتائج پر اثر انداز ہونے کی کوشش کرنے والے ہیکرز دنیا میں کہیں سے بھی ہوسکتے ہیں۔انھوں نے یہ بات امریکی ٹی وی کو انٹرویومیں کہی ،انھوں نے کہاکہ ہیکرز کہیں بھی ہوسکتے ہیں۔وہ روس میں ہوسکتے ہیں ،ایشیا ، امریکا یا لاطینی امریکا میں کسی بھی جگہ ہوسکتے ہیں۔امریکا کے انٹیلی جنس اداروں نے حال ہی میں اپنی تحقیقات میں روس پر گذشتہ سال صدارتی انتخابات کے دوران میں گڑ بڑ کرانے کا الزام عایدکیا ہے۔روسی صدر نے اس کی تردید کرتے ہوئے کہاکہ ہیکرز تو کہیں بھی اور امریکا میں بھی موجود ہو سکتے ہیں ۔انھوں نے اب بڑی مہارت اور پیشہ ورانہ انداز میں روس کو اس کا مورد الزام ٹھہرا دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بعض اندازوں کے مطابق ان کے لیے یہ آسا ن تھا کہ وہ اس طرح کی معلومات جاری کردیں اور انھوں نے ایسا کیا اور اس میں روس کا حوالہ دیا ہے۔کیا آپ اس طرح کی بات تصور کرسکتے ہیں ؟ میں تو کرسکتا ہوں۔امریکی انٹیلی جنس اداروں نے صدر پوتین پر الزام عاید کیا ہے کہ انھوں نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حق میں انتخابی نتیجہ ہموار کرنے کے لیے ہیکنگ اور انتخابی مہم پر اثر انداز ہونے کا حکم دیا تھا۔ واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے انتخابی مہم کے دوران میں منتخب ہونے کی صورت میں روس سے بہتر تعلقات استوار کرنے کا عندیہ دیا تھا۔صدر پوتین نے جمعہ کو سینٹ پیٹرزبرگ منعقدہ سالانہ اقتصادی فورم سے خطاب کرتے ہوئے بھی اس الزام کی مذمت کی تھی کہ روس نے امریکا کے صدارتی انتخابات میں کوئی مداخلت کی ہے۔انھوں نے کہا کہ یہ فضول اور ضرررساں گفتگو اب بند ہوجانی چاہیے۔ان کے بہ قول امریکا میں اندرونی کھینچا تانی کا الزام بیرون ملک منتقل کیا جارہا ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...