دس ہزار سکولوں کو آؤٹ سورس کرنا غیردانشمندانہ اقدام ہے، رانا لیاقت

دس ہزار سکولوں کو آؤٹ سورس کرنا غیردانشمندانہ اقدام ہے، رانا لیاقت

لاہور( خبرنگار) پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی جنرل سیکرٹری رانا لیاقت علی نے کہا ہے کہ دس ہزار سکولوں کو آؤٹ سورس (OUt Source ) کرنا غیردانشمندانہ اقدام ہے۔دو سال قبل پانچ ہزار سکولوں کو پیف کے حوالے کرنے کا اعلان کیا گیاتھاان میں سے 4275 سکول حوالے ہو سکے باقی 725 سکولوں کو کوئی لینے کو تیار نہیں ۔ ان میں ناموافق حالات کے باوجود سرکاری اساتذہ تدریسی فرائض انجام دے رہے ہیں۔ تعلیمی میدان میں ترقی اتھارٹیز اور تعلیمی اداروں کو آؤٹ سورس کرنے یا پیف کے حوالے کرنے سے نہیں ہوتی بلکہ زمینی حقائق کا جائزہ لیکر اور اساتذہ کی مشاورت سے اصلاحات کرنے سے ہوگی۔ موجودہ تعلیمی نظام کو نت نئے تجربات کرکے تباہ نہ کیا جائے ۔پیف کی انتظامیہ اپنی کارکردگی مصنوعی اعدادوشمار پیش کرکے دکھا رہی ہے۔ پرائیویٹ سکول مالکان تین سال کے بچوں کو بھی سکولوں میں داخل کرکے تعداد میں اضافہ کر رہے ہیں۔

جو کہ رولز کی سنگین خلا ف ورزی ہے۔سرکاری تعلیمی اداروں کی کارکردگی بہتر بنانے کے لئے اساتذہ میں عدم تحفظ کی فضاء کو ختم کرنا ہوگا۔محکمہ تعلیم اور اساتذہ تنظیموں کو مل بیٹھ کر لائحہ عمل طے کرنا ضروری ہے وگرنہ سرکاری تعلیمی ادارے ملکی و غیر ملکی مشیران تعلیم کی وجہ سے تباہ ہو جائیں گے۔لہذا وزیر اعلی پنجاب سے مطالبہ ہے کہ گزشتہ 9سالوں سے ملکی و غیر ملکی نا م نہاد مشیران تعلیم جن کو زمینی حقائق کا ادراک نہیں اور جن کی پالیسیوں کی وجہ سے تعلیمی نظام تنزلی کا شکار ہے سے چھٹکارا پانا ہوگا۔ خدارا ہوش کے ناخن لئے جائیں اور نت نئے تجربات کرنے سے گریز کیا جائے ورنہ پنجا ب ٹیچرز یونین 10 ہزار سکولوں کو آؤٹ سورس(Out Source) کرنے کے خلاف احتجاجی راستہ اختیار کرے گی۔کیونکہ اتھارٹیز کا قیام ، آؤٹ سورس کرنا یا تعلیمی اداروں کوپیف کے حوالے کرنا غیردانشمندانہ اقدام ہے جس کے خلاف ہم بھر پور احتجاج کا اعلان کرتے ہیں ۔جس کا لائحہ عمل کا اعلان چند روز میں کیا جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4