حکومت محسن سید کی گرفتاری کے حوالے سے اپنی پوزیشن واضح کرے:سردار حسین بابک

حکومت محسن سید کی گرفتاری کے حوالے سے اپنی پوزیشن واضح کرے:سردار حسین بابک

پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے نیب کی جانب سے خیبر پختونخوا اکنامک زون ڈیولپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی کے سی ۔ ای ۔ او محسن سید کی گرفتاری پر صوبائی حکومت کی خاموشی کو حیران کن قراردیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ محسن سید کی گرفتاری کے حوالے سے حکومت وضاحت کرے اور بتائے کہ انہیں کس جرم میں گرفتار کیا گیا ہے ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ متذکرہ کمپنی کے ساتھ کروڑوں روپے کے منصوبوں کیلئے معاہدے کئے گئے اور اب بھی یہ عمل جاری ہے ، انہوں نے کہا کہ اے این پی اس اہم ایشو پر صوبائی اسمبلی میں تحریک التواء پیش کرے گی اور سپیکر صوبائی اسمبلی سے درخواست کی جائے گی کہ وہ اس اہم فوری اور قومی مفاد کے معاملے پر بحث کی اجازت دی جائے۔انہوں نے کہا کہ محسن سید کی گرفتاری کے حوالے سے صوبائی حکومت وضاحت اور تفصیل پیش کرے۔سردار حسین بابک نے کہا کہ پنجاب سے امپورٹ کردہ شخص کو صوبے میں انتہائی اہم ذمہ داری سونپی گئی اور اسی کے زیر نگرانی اربوں روپے کے منصوبے آگے بڑھنے تھے لیکن نجانے نیب نے کن وجوہات کی بنا پر انہیں گرفتار کیا ہے اور حیران کن بات یہ ہے کہ ان کی گرفتاری کو کئی روز گزرنے کے باوجود صوبائی حکومت وضاحت کرنے میں ناکام رہی ، انہوں نے کہا کہ دوسروں پر الزامات لگانے والی صوبائی حکومت اور ان کی جماعت نے صوبے کے ہر محکمے میں کرپشن کیلئے راستے کھولے اور اسمبلی میں عددی اکثریت کی بنیاد پر اپنوں کیلئے قانونی راہ بھی ہموار کر دی ہے جو کہ اختیارات کا ناجائز استعمال ہے ، انہوں نے کہا کہ اے این پی حکومت کی کرپشن اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا بھرپور جواب دے گی اور ان کا راستہ روکنے کیلئے ہر فورم پر مقابلہ کرے گی۔ ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر