وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے 10کھرب 43ارب روپے کا بجٹ پیش کر دیا

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے 10کھرب 43ارب روپے کا بجٹ پیش کر دیا
وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے 10کھرب 43ارب روپے کا بجٹ پیش کر دیا

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے 10 کھرب43 ارب روپے مالیت کا بجٹ پیش کردیا جس میں ترقیاتی اخراجات کی مد میں 254 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سندھ اسمبلی میں صوبے کا ٹیکس فری بجٹ پیش کیا جس میں وسائل کا سب سے زیادہ حصہ تعلیم کے لیے رکھا گیا ہے‘ تعلیمی بجٹ میں رواں سال 24 فیصد اضافہ کیا گیا ہے‘ تعلیم کا کل بجٹ 202 ارب روپے ہیں۔

اس موقع پر توانائی بحران کے حوالے سے مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ بجلی نہ دے کرصوبے کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے ،سب سے زیادہ گیس پیدا کرنے والے صوبے میں آج بجلی نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سندھ 70 فیصد توانائی پیدا کرتا ہے‘ وفاق بجلی کی پیداوار بڑھانے پر غلط بیانی نہ کرے۔ان کا کہنا تھا کہ حیسکو کو 27 ارب روپے بل کی مد میں ادا کیے تاہم ادائیگیوں کے بعد بھی بجلی فراہم نہیں کی جارہی ہے جس سے صوبے میں عذاب کی سی صورتحال ہے۔ انہوں نے کہا کہ ادائیگیوں کے باوجود سندھ کو بجلی فراہم نہیں کی جار ہی، اس معاملے پر صوبے کے ساتھ تماشا ہو رہا ہے ۔

مزید خبریں :پاکستان کے مشہور آرٹسٹ کے انتقال پر وقار ذکا نے ایدھی کے سرد خانے کے باہر پہنچ کر ایسی متنازعہ ویڈیو جاری کردیا کہ لالی ووڈ میں کھلبلی مچ گئی ،علی حیدر سے بھی رہا نہ گیا فوری جواب دے دیا

انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت سندھ کو اس کا جائز حصہ دے ،وہ اپنا وعدہ پورا کرے اور 108ارب روپے دے ،اس سال 95ارب روپے کی کمی کا سامنا ہے ۔ان کا کہنا تھاکہ 10ماہ میں صرف 382ارب روپے وصول ہوئے ،سندھ کی مجموعی وصولیوں کا تخمینہ 1.02ٹریلین روپے ہے ،صوبائی ٹیکس ،نان ٹیکس وصولیو ںکا نظر ثانی شدہ تخمینہ 159.29ارب ہے ۔مراد علی شاہ نے کہا کہ ترقیاتی اخراجات پر نظر ثانی شدہ رقم 225ارب کی گئی ہے ،رواں مالی سال 88فیصد ترقیاتی بجٹ استعمال کر چکے ہیں ۔

مزید : کراچی /اہم خبریں