ادویات کے نرخ کم نہ ہوسکے

ادویات کے نرخ کم نہ ہوسکے

  

دوسری اہم باتوں کی طرح ادویات کی قیمتوں میں کمی کا مسئلہ بھی لٹک گیا اور حکومت کے واضح اعلان کے باوجود تاحال کسی بھی دوائی کی قیمت کم نہیں ہوئی۔ دکان داروں کے مطابق ان کے پاس نہ تو ادویات کی نئی قیمتوں کا نوٹیفکیشن آیا اور نہ ہی نئی سپلائی موصول ہوئی جس پر کم قیمتیں درج ہوں، وفاقی وزیر صحت نے فارماکمپنیوں سے مذاکرات کے بعد بتایا تھا کہ قریباً پونے چار سو ادویات کے نرخ 75فیصد تک کم کر دیئے گئے اور باقی ادویات کے حوالے سے بات جاری ہے، ادویات ساز اداروں نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے ساتھ مذاکرات کے بعد 10سے 15اور خاص صورتوں میں 25فیصد تک نرخ بڑھانے کا فیصلہ کیا تھا لیکن جب عمل کی باری آئی تو نرخ پچیس فیصد سے ڈھائی سو فیصد تک بڑھا دیئے گئے اس پر احتجاج ہو رہا ہے، وفاقی وزیر صحت نے حالات کو سنبھالنے کے لئے خود مذاکرات کئے اور خوشخبری دی کہ ادویات کی قیمتیں کم ہو گئی ہیں۔ضرورت مند مریضوں نے ڈرگ سٹوروں اور فارمیسی والوں سے رجوع کیا تو پتہ چلا کہ کسی بھی دوا کی قیمت کم نہیں ہوئی۔ دوا فروشوں کا کہنا ہے کہ انہیں کم قیمت پر سپلائی ملے گی تو وہ خوردہ قیمت پر بیچیں گے۔ایسا نہیں ہوا چنانچہ وہ اپنا نقصان نہیں کریں گے۔ متعلقہ وزیر اور وفاقی حکومت کو اس کا نوٹس از خود لینا چاہیے کہ وعدے کے مطابق قیمتیں کیوں کم نہیں ہوئیں؟ دکان داروں کا موقف واضح ہے کہ سپلائرز کی جانب سے نئی قیمتوں پر ادویات فراہم کی جائیں گی تو گاہکوں کو بھی سستی دیں گے۔

مزید :

رائے -اداریہ -