فرانس کے تجارتی وفد کا دورہ لاہور چیمبر، سرمایہ کاری کی خواہش

فرانس کے تجارتی وفد کا دورہ لاہور چیمبر، سرمایہ کاری کی خواہش

  

لاہور(نیوز رپورٹر) فرانس کے 29رکنی اعلی سطحی اور تاریخ کے سب سے بڑے تجارتی وفد نے لاہور چیمبر کے دورہ کے موقع پر پاکستان میں تجارت و سرمایہ کاری بڑھانے میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ فرانس پاکستان بزنس کونسل کے چیئرمین تھیری فلملین وفد کی سربراہی کررہے تھے، لاہور چیمبر کے نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے اجلاس کی صدارت کی جبکہ پاکستان میں فرانسیسی سفیر مارک بارٹی، پراجیکٹ آفیسر برائے ساؤتھ ایشیا مس لانا راول، قونصلر برائے ایگریکلچر افیئرز فرینکوئزمورائیولالین، فرانس میں پاکستانی کمرشل قونصلر ڈاکٹر معین الدین احمد وانی، لاہور چیمبرکے سابق صدر ملک طاہر جاوید اور ایگزیکٹو کمیٹی اراکین نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ فرانسیسی وفد کے سربراہ نے کہا کہ فرانسیسی کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے اور کاروبار بڑھانے میں گہری دلچسپی رکھتی ہیں، وفد کے دورے کا بنیادی مقصد پاکستان میں کاروبار و سرمایہ کاری کے نئے مواقع کی تلاش ہے۔ انہوں نے کہا کہ تجارتی وفود کا تبادلہ باہمی تعلقات کے استحکام میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ لاہور چیمبر کے نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے تجارتی اعداد و شمار کا جائزہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ 2017ء میں باہمی تجارت کا حجم 1068ملین ڈالر تھا جو 2018ء میں کم ہوکر 902ملین ڈالر رہ گیا، اس کی بڑی وجہ پاکستان کی فرانس سے درآمدات میں کمی تھی۔ انہوں نے کہا کہ 2017ء سے 2018ء کے دوران فرانس کو برآمدات میں 12فیصد اضافہ جبکہ درآمدات میں 32فیصد کمی ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کو باہمی تجارت بڑھانے کے لیے مشترکہ اقدامات اٹھانے اور ایک دوسرے کو مارکیٹوں تک رسائی دینی چاہیے۔ فہیم الرحمن سہگل نے کہا کہ دونوں ممالک ٹیلی کمیونیکیشن، آٹوموبیلز، شپ بلڈنگ، آٹوموٹیو پارٹس، دفاعی آلات، آئل اینڈ گیس، انفراسٹرکچر، ٹیکسٹائل، گارمنٹس سمیت دیگر بہت سے شعبوں میں مل کر کام کرسکتے ہیں۔ لاہور چیمبر کے نائب صدر نے کہا کہ پاکستان میں کی جانے والی سرمایہ کاری پاکستان کے علاوہ وسطی ایشیائی ریاستوں اور خطے کے دیگر ممالک سے بھی فائدہ اٹھاسکتی ہے۔ 

مزید :

کامرس -