ججز کیس،کسی کو ڈکٹیٹ نہیں کیا،سپریم جوڈیشل کونسل فیصلہ کریگی،فردوس عاشق

ججز کیس،کسی کو ڈکٹیٹ نہیں کیا،سپریم جوڈیشل کونسل فیصلہ کریگی،فردوس عاشق

  

لاہور /اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) وزیراعظم کی معاون خصوصی اطلاعات ونشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ ججز کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل کیس میں عدلیہ ہی شکایت سنے گی اور وہی فیصلہ کرے گی، ہم نہ کسی کو ڈکٹیٹ کر رہے ہیں نہ آئینی حدود سے باہر جا رہے ہیں، عمران خان نے بار بارکہا ہے کہ دو نہیں ایک قانون سب کیلئے، پچھلی حکومتوں نے مسائل کارپٹ کے نیچے دبا دبا کر کینسر بنا دئیے۔لاہور پریس کلب میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہ ہم سب وزیراعظم عمران خان کے کھلاڑی ہیں، ہم نے عمران خان کے راستے میں کانٹے نہیں بکھیرنے، عمران خان تصادم پر یقین نہیں رکھتے۔ کابینہ میں بیٹھے لوگوں کی پسند نا پسند ہوسکتی ہے مگر وہ ہماری وزارت کیساتھ نہیں جڑنا چاہئے۔مشیر اطلاعات  نے کہاکہ لاہور سے جو سوچ ابھرتی ہے پورے ملک میں پھیلتی ہے، پچھلے دس سال ہم تخت لاہور کے قیدی رہے، ہمیں دیوار سے لگا یا گیا ترقی کا سفر چند شہروں تک محدود کرکے باقی پنجاب کا محروم کیا گیا۔انہوں نے کہاکہ ہمیں پتہ ہے کہ ووٹ کی عزت کیسے ہوتی ہے ووٹ کی عزت جو جیت جائے اس کے ساتھ منسلک ہوتی ہے، جہاں آپ جیت جائیں وہاں شکست تسلیم کرنا ہی ووٹ کی عزت ہوتی ہے۔ اگر آپ وزیراعظم عمران خان کو غلط القاب سے پکاریں گے تو آپ اس کرسی کو نشانہ بناتے ہیں، عبوری ویج بورڈ عید کے بعد نوٹیفائی ہونے جا رہا ہے۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عید کے بعد نئی میڈیا پالیسی تمام پریس کلبز کو بھیج رہے ہیں، پریس کلبز کی گرانٹس بحال کرنے جا رہے ہیں،وزارت اطلاعات ونشریات اصلاحات کی طرف بڑھ رہی ہے، عمران خان کانظریہ ہے پبلک ریلیف پروگرام، اگر کوئی شخص اس میں رکاوٹ بنے گا اسے اس عہدے پر رہنے کا کوئی حق نہیں۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک پیغام میں ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا وزیراعظم نے بے کس،بے بس قیدیوں کے جرمانے دا کرکے820 خاندانوں کوعید کا تحفہ دیاہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پرقیدیوں کی رہائی حکومتی احساس میں تبدیلی کی علامت ہے، محض جرمانہ اداکرنے کی استطاعت نہ ہونے پرقیدیوں کوعقوبت سے نجات دلانااسلام کے احکامات پرعمل ہے۔

فردوس عاشق اعوان

مزید :

صفحہ آخر -