انتشار پھیلانے والے لوگوں کا  محاسبہ ضروری ہے،پیر اعجاز ہاشمی

انتشار پھیلانے والے لوگوں کا  محاسبہ ضروری ہے،پیر اعجاز ہاشمی

  

لاہور (پ ر)   جمعیت علمائے پاکستان کے مرکزی صدر اور نائب صدر متحدہ مجلس عمل پیر اعجاز احمد ہاشمی نے کہا ہے کہ عید پر مسلمانوں کو تقسیم کرنے کی سازش کے پیچھے حکومتی سرپرستی واضح نظر آرہی ہے۔ ایسے انتشاری لوگوں کا محاسبہ ضروری ہے جو ریاستی اداروں کی بجائے اپنی ڈیڑھ اینٹ کی علیحدہ مسجد بنا کر اسلام اور پاکستان کا مذاق اڑاتے ہیں۔ اگر ایسا نہ کیا گیا تونئے طالبان ملکی سلامتی کے لیے مستقبل میں خطرہ بھی ہو سکتے ہیں۔میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت میں پوپلزئی ذہنیت سرایت کر چکی ہے۔جس کی وجہ سے 28 ویں روزے عوام کو عید کروادی گئی ہے۔ لیکن ہزارہ کے عوام نے قوم کی تقسیم کے فیصلے کو مسترد کرکے اچھا اقدام کیا ہے۔وفاقی حکومت کوپوپلزئی اور صوبائی حکومت کا نوٹس لینا چاہیے۔

ہے تمام محکمے اس بات پر متفق ہیں کہ چاند نظر نہیں آیا تو ایک دن پہلے حکومت کی طرف سے اعلان قابل مذمت ہے۔ ایسے مولویوں کا محاسبہ ضروری ہے جو قوم کو تقسیم کرتے ہیں۔تحقیقات کی جائیں یہ کون لوگ ہیں جنہوں نے چاند دیکھنے کی جھوٹی شہادتیں دے کر جگ ہنسائی کا موقع دیا۔ ذمہ داروں کے خلاف تادیبی کارروائی ہونی چاہیے۔یہ بھی ایک قسم کی دہشت گردی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -