اقوام متحدہ نے بھارت کوآزادی اظہار دبانے پر مجرم قرار دیدیا

    اقوام متحدہ نے بھارت کوآزادی اظہار دبانے پر مجرم قرار دیدیا

  

نیو یارک(آئی این پی)اقوام متحدہ نے بھارت کو کورونا بحران کے دوران اپنے ملک میں آزادی اظہار کو دبانے کا مجرم قرار دے دیا۔ اقوام متحدہ کی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے چین، بھارت، بنگلادیش اور دیگر ایشیائی ملکوں سے کہا ہے کہ وہ کورونا بحران کا بہانہ بنا کر آزادی اظہار کو دبانے اور سنسرشپ کی گرفت مضبوط تر کرنے سے گریز کریں۔اس کے ساتھ ہی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے بھارت کو کورونا بحران کے دوران اپنے ملک میں آزادی اظہار کو دبانے کا مجرم قرار دیا۔واضح رہے کہ بھارت میں کورونا وائرس کی آڑ میں ملک کی سب سے بڑی اقلیتی مسلمانوں کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے اور ہندو انتہا پسند مسلمانوں کو کورونا وائرس کا ذمہ دار قرار دے کر ان کی املاک کو نقصان پہنچارہے ہیں۔

مجرم قرار

اسلام آباد(سٹاف رپورٹرئن) اسلامی ممالک کی تنظیم او آئی سی کے انسانی حقوق کمیشن نے بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں ڈومیسائل کے متعارف کردہ قانون کو یکسر مسترد کردیا ہے۔او آئی سی کے انسانی حقوق کمیشن کی جانب سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک پیغام شیئر کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بھارت کی مقبوضہ کشمیر میں مسلم اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش غیرقانونی ہے۔ٹوئٹر پر جاری کردہ پیغام میں او آئی سی نے مزید کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں متعارف کرایا گیا نیا قانون اقوام متحدہ کی قراردادوں کے منافی ہے اور آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے کی یہ کوشش جنیوا کنونشن اور عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔گزشتہ روز پاکستانی دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں بھی بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں ڈومیسائل کے متعارف کردہ قانون کو مسترد کیا گیا تھا۔

او آئی سی

مزید :

صفحہ اول -