جعلی دستخط کر کے رقم نکلوانے والے ملزم کی درخواست ضمانت منظور

جعلی دستخط کر کے رقم نکلوانے والے ملزم کی درخواست ضمانت منظور

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے جعلی دستخط کر کے 10لاکھ روپے نکلوانے والے ملزم ذیشان کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری منظور کرتے ہوئے اسے 5لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے کے عوض رہا کرنے کا حکم دے دیا،جسٹس طارق عباسی کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ نے درخواست ضمانت پر سماعت کی،دوران سماعت فاضل بنچ نے کا درست تفتیش نہ کرنے پر ایف آئی اے کے انسپکٹر پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے بینک ملازمین کو شامل تفتیش کیوں نہیں کیا؟درخواست گزار کے وکیل کا موقف ہے کہ ان کا موکل 7ماہ سے جیل میں قید ہے،گرفتاری کے باوجود ایف آئی آر تاخیر سے درج کی گئی،ملزم پر شہری جمیل کے اکاؤنٹ سے چیک بک جاری کروا کے استعمال کرنے کا الزام ہے،ایف آئی آر میں چیک کے ذریعے 10لاکھ روپے نکلوانے کا الزام لگایا گیاہے،نجی بینک انتظامیہ نے چیک پر موجود دستخط کی تصدیق کر کے رقم جاری کی درخواست گزار پر جھوٹے الزام لگا کر مقدمہ درج کیا گیاہے،عدالت سے استدعاہے کہ ملزم کی ضمانت کی درخواست منظور کی جائے،فاضل بنچ نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد ملزم کی ضمانت بعد ازگرفتاری کی درخواست منظور کرتے ہوئے اسے رہا کرنے کاحکم دے دیاہے۔

جعلی دستخط

مزید :

صفحہ آخر -