چین میں نایاب مچھلی کے شکار پر ایک شخص کو ایک سال قید کی سزا

  چین میں نایاب مچھلی کے شکار پر ایک شخص کو ایک سال قید کی سزا

  

شنگھائی(شِنہوا)شنگھائی کی ایک عدالت نے بقا کے خطرے سے دوچار چینی اسٹارجن مچھلی کے غیر قانونی شکار اور اسے مارنے کے جرم میں ایک شخص کو ایک سال قید کی سزا اور 5 ہزار یوآن (تقریبا 704 امریکی ڈالر)جرمانہ عائد کیا ہے۔ چھونگ منگ ڈسٹرکٹ پیپلز کورٹ کے مطابق گذشتہ سال 6 اگست کو ملزم شنگ نے چھونگ منگ ضلع کے شی شان جزیرے کے پانیوں میں اپنی ملکیتی کشتی پر سفر کیا اور چینی اسٹرجن اور دوسری مچھلیوں کا بغیر لائسنس کیشکار کیا۔ بدھ کے روز سنائے گئے عدالتی فیصلے میں شنگ کواپنے اس فعل پر عوام سے معافی مانگنے،نایاب اور خطرے سے دوچار جنگلی حیات کے غیر قانونی شکار سے ماحول کو نقصان پہنچانے پر بطور ہرجانہ اضافی 40ہزار یوآن ادا کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔ خیال کیا جاتا ہے کہ چینی اسٹرجن مچھلی ڈائنوسارزکے دور میں کرہ ارض پر موجود تھی جو چین میں انتہائی تحفظ دئے گئے جانداروں کی فہرست میں شامل ہے۔

نایاب مچھلی

مزید :

صفحہ آخر -