ٹڈی دل سے سندھ کے 22 اضلاع متاثر ہو چکے،وزیر زراعت

ٹڈی دل سے سندھ کے 22 اضلاع متاثر ہو چکے،وزیر زراعت

  

کراچی (آئی این پی) وزیر زراعت اسماعیل راہو نے کہا ہے کہ چند ہفتے میں ٹڈی دل سے سندھ کے 22 اضلاع متاثر ہو چکے ہیں، آنے والے وقتوں میں سب سے زیادہ خطرہ سندھ کو ہے۔ تفصیلات کے مطابق حکومت سندھ نے صوبے میں ٹڈی دل مہم سپرے کے اعداد و شمار جاری کر دیے، صوبائی وزیر زراعت اسماعیل راہونے کہا ہے کہ وفاق کا سندھ میں ٹڈی دل سے متاثرہ اضلاع کم دکھانا تشویشناک ہے۔ آنے والے وقتوں میں سب سے زیادہ خطرہ سندھ کو ہے۔ وفاق خط کا جواب نہیں دے رہا۔ متاثرہ فصلوں میں سپرے مہم جاری اور فوج کا تعاون حاصل ہے، 13 اضلاع میں 2233 ہیکٹرز پرسپرے کیا گیا، وفاقی ٹیموں نے 840 ہیکٹرز پرسپرے کیا۔ شکار پور، کشمور، نواب شاہ، جامشورو، قمبر، گھوٹکی، سانگھڑ اور دیگر اضلاع میں اسپرے کیا گیا ہے۔ اسماعیل راہو نے بتایا کہ سندھ میں اب تک 31 ہزار 699 ہیکٹرز پر ٹڈی دل کا خاتمہ اور 4 لاکھ 21 ہزار 861 ہیکٹرز پر مزید سروے کیا گیا، اب تک 68 لاکھ 45 ہزار 161 ہیکٹرز کا سروے مکمل ہوچکا ہے، 5 دن میں 3 ہزار 73 ہیکٹرز پر اسپرے کیا گیا، بارشیں شروع ہو چکی ہیں ابھی تک وفاق نے فضائی سپرے شروع نہیں کیا، وفاق کو فیلڈ ٹیموں کے اضافے اور طیاروں کی دستیابی کی کئی بار درخواست کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ قومی مسئلے پر وفاق کی عدم توجہی اور لاپرواہی افسوسناک ہے۔

اسماعیل راہو

مزید :

پشاورصفحہ آخر -