طلال چوہدری نے ڈاکٹر شہباز گل پر ایک بار پھر سنگین الزام لگاتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کو بھی کھری کھری سنا دیں

طلال چوہدری نے ڈاکٹر شہباز گل پر ایک بار پھر سنگین الزام لگاتے ہوئے وزیر اعظم ...
طلال چوہدری نے ڈاکٹر شہباز گل پر ایک بار پھر سنگین الزام لگاتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کو بھی کھری کھری سنا دیں

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کےرہنمااورسابق وزیرمملکت طلال چوہدری نےڈاکٹر شہباز گل کا نام لئے بغیر اُن پر سخت تنقید  کرتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین کو ہراساں کرنے کے معاملے پہ یونیورسٹیوں سے فارغ ہونے والے حکومتی ترجمان آج پھر آئین اور قانون پہ لیکچر دے رہے تھے،شہباز شریف اور اس کا خاندان تو پچھلے تین سال سے اپنی تین نسلوں کا حساب عدالتو٘ں میں دے رہا ہے،شہباز شریف نہیں وزیر اعظم مفرور ہیں،جب عدالتوں میں جھوٹی رام کہانیوں کو ڈیفینڈ کرنے کی باری آتی ہے تو "نیب نیازی گٹھ جوڑ"دوڑ جاتے ہیں،گلی محلوں میں لوگ اس بد قسمت دن کو یاد کرتے ہوئے عمران خان کو ڈھونڈ رہے ہیں جس دن وہ اقتدار میں آئے تھے۔

تفصیلات کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر اپنے ویڈیو بیان میں طلال چوہدری کا کہنا تھا کہ آج پھرحکومتی ترجمان آئین اور قانون پہ لیکچر دے رہے تھے وہ ترجمان جو عدالتوں میں جھوٹی گواہیاں دیتے رہے ہیں جو خواتین کو ہراساں کرنے کے معاملے پہ یونیورسٹیوں سے فارغ ہوتے رہے ہیں اور کہتے ہیں کہ شہباز شریف مفرور تھا ،شہباز شریف اور اس کا خاندان تو پچھلے تین سال سے اپنی تین نسلوں کا حساب تو عدالتو٘ں میں بھی دے رہا ہے،نیب کی کال کوٹھڑیوں میں رہ کر بھی دیا اور عوامی عدالت میں بھی دے رہا ہے،مفرور تو آپ ہیں،آٹا چینی چوری کر کے مفرور ہیں،سونامی ٹری میں مفرور ہیں،ہیلی کاپٹر کیس میں مفرور ہیں ، پشاور بی آرٹی میں مفرور ہیں۔

طلال چوہدری نے کہا کہ اور تو اور ہم نے آپ پر ہتک عزت کا دعویٰ کیا ہےکیونکہ آپ نے جو جھوٹے الزام لگائے تھے،ہم عدالتوں میں اس کا پیچھا کر رہے ہیں ،آج بھی عمران خان اور ان کے وکیل عدالت میں پیش نہیں ہوئے،پچھلے تین سال سے ان جھوٹے الزامات پر ہم نے جو دعویٰ کئے ہیں وہاں آپ کے پاس کوئی جواب نہیں ہے اور "نیب نیازی گٹھ جوڑ"جو ہے ،جب عدالت میں جواب دینے کی باری آتی ہے،عدالت میں ان رام  کہانیوں کو ڈیفینڈ کرنے کی بات آتی ہے تو پھر دوڑ جاتے ہیں ۔

انہوں نےکہاکہ اگرشہبازصاحب اتنےبڑےمجرم تھےتوسپریم کورٹ سےنیب کےوکیل نےدرخواست واپس کیوں لی؟وہاں سے انکا وکیل کیوں دوڑا؟وہاں سے نعیم بخاری نے نیب کا کیس کیوں ڈیفینڈ نہیں کیا؟جس میں وہ کہتے ہیں کہ شہباز شریف  ملزم ہیں ،جب جھوٹی اور رام کہانیاں بنائیں گے تو جان لیں کہ جھوٹی کہاںیوں کے پاؤں نہیں ہوتے،یہ ڈیفینڈ نہیں ہوسکتیں، شہباز شریف جانے جاتے ہیں کام کرنے کے نام سے،اورنج لائن ہو ، میٹرو ہو ،مفت دوائیاں ہوں ،کارپٹ سڑکیں ہوں ،گورننس کی بات ہو ،ڈینگی کو کنٹرول کرنے کی بات ہوتو شہباز شریف کا نام آئے گا،سی پیک ،موٹروے،ائیرپورٹس،گوادر پورٹ، بجلی گھروں کے منصوبوں  اور ترقی کی بات ہو تولوگ نواز شریف کو یاد کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کو بھی لوگ یاد کرتے ہیں،اس بد قسمت دن  کو بھی یاد کرتے ہیں جس دن آپ اقتدار میں آئے، آج بے روزگاری اور مہنگائی اپنے عروج پر ہے،عام آدمیوں کے لئے شکایات سیل کی ضرورت نہیں ہے،اُن کو روٹی کی ضرورت ہے،اُن شکایات سیل میں کیا آپ یہ آوازیں  نہیں سن رہے کہ انہیں روٹی نہیں مل رہی،مہنگائی آسمان سے باتیں کر رہی ہے،اُن کا روزگار چھین لیا ہے آپ کی حکومت نے،اُن شکایات سیل میں کیا آپ کو یہ آوازیں سنائی نہیں دیتیں؟اگر نہیں دیتیں تو کسی گلی محلے میں آ کر دیکھیں لوگ آپ کو ڈھونڈ رہے ہیں اور اُس بد قسمت دن کو یاد کر رہے ہیں جب آپ اقتدار میں آئے،آپ نے غریب آدمی کو موت کے منہ میں دھکیل دیا ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -