کورونا وباءکے مشکل ترین دور میں پی سی بی نے ایسا کام کر دیا کہ سابق کرکٹرز بھی خوشی سے نہال ہو گئے، جان کر آپ بھی تعریف کرنے پر مجبور ہو جائیں

کورونا وباءکے مشکل ترین دور میں پی سی بی نے ایسا کام کر دیا کہ سابق کرکٹرز بھی ...
کورونا وباءکے مشکل ترین دور میں پی سی بی نے ایسا کام کر دیا کہ سابق کرکٹرز بھی خوشی سے نہال ہو گئے، جان کر آپ بھی تعریف کرنے پر مجبور ہو جائیں

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) وسیم خان نے نچلے طبقے کے ملازمین کو دئیے جانے والے ملازمت سے برخاستگی کے تمام نوٹس واپس لینے کا اعلان کر دیا ہے جس پر سابق کرکٹرز اور ناقدین سب ہی اس فیصلے کو قابل ستائش قرار دے رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پی سی بی نے رواں ہفتے سرپلس قرار دے کرملک بھر سے نچلے طبقے کے 55 ملازمین کو ملازمت سے برطرفی کے نوٹس دئیے تھے جس پر کرکٹ حلقوں اور سوشل میڈیا پر سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑا جس کے بعد جمعہ کے روز وسیم خان نے یہ تمام نوٹسز واپس لینے کا اعلان کیا۔ پی سی بی کے اس فیصلے کو سوشل میڈیا پر خوب پذیرائی مل رہی ہے جہاں سابق کرکٹرز اور ناقدین سب ہی پی سی بی کے فیصلے پر نظرثانی کو قابل ستائش عمل قرار دے رہے ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اظہار خیال کرتے ہوئے سابق کپتان قومی کرکٹ ٹیم عامر سہیل کا کہنا تھا کہ وہ نچلے طبقے کے ملازمین کی نوکریاں بحال کرنے پر احسان مانی کی تعریف کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک غلطی تھی اور اب وہ اس خوش آئند عمل کو سراہتے ہیں۔ عامر سہیل کا شمار پی سی بی کے موجودہ افسران کے ایک بڑے ناقدین میں ہوتا ہے۔

سابق کپتان اور سوشل میڈیا پر متحرک رہنے والے سابق وکٹ کیپر راشد لطیف نے بھی فیصلے پر اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ اچھا فیصلہ ہے کہ نچلے طبقے کے ملازمین کو بھی پی سی بی کی فیملی کا حصہ سمجھا گیا ہے۔ ماضی کی مثال دیتے ہوئے راشد لطیف نے کہا کہ نجم سیٹھی کے دور میں 27 ٹرینرز کو نوکریوں سے فارغ کیا گیا مگر اس وقت کی انتظامیہ نے عوامی ردعمل کے باوجود انہیں واپس نہیں رکھا۔

مزید :

کھیل -